احٹجاج میں سرکاری املاک کو نقصان پہنچا تو ایکشن ہوگا:چیف سیکرٹری سندھ

احٹجاج میں سرکاری املاک کو نقصان پہنچا تو ایکشن ہوگا:چیف سیکرٹری سندھ

  

کراچی (اکنامک رپورٹر)چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا ہے کہ سیاسی جماعتوں کے قائدین اور رہنماﺅں کی گرفتاری پر اگر کوئی ردعمل احتجاج کی صورت میں ظاہرکیا گیااورسرکاری املاک کو نقصان پہنچایا گیا تو قانون کے مطابق ایکشن لیا جائے گا۔انہوں نے یہ بات منگل کو ایف پی سی سی آئی کے دورے کے موقع پرمیڈیا دے گفتگو اورفیڈریڈن ممبران سے خطاب کے دوران کہی۔ اس موقع پر فیڈریشن کے قائمقام صدر نوراحمد خان،ایس ایم منیر، سینیٹر عبدالحسیب خان، سابق سینئرنائب صدورخالدتواب، مظہر علی ناصر اور سابق نائب صدرشبنم ظفرنے بھی خطاب کیا۔جبکہ شکیل ڈھینگڑا،وسیم وہرہ، کنوینراسٹینڈنگ کمیٹی برائے کسٹم ایجنٹس محمدساجد بھی موجود تھے۔چیف سیکریٹری سندھ نے کہا کہ نجی سیکٹرزسندھ کے کسی بھی اضلاع صنعت لگاناچاہتے ہیں انھیں بجلی پانی اوربنیادی سہولتوں کی فراہمی میرے ذمہ ہے۔چیف سیکرٹری سندھ نے کہا کہ میری ترجیح سرمایہ کاری کوفروغ دیناہے جبکہ گورنر سندھ کی اولین ترجیح بھی سرمایہ کاری میں اضافہ کرنا ہے،صوبے میں حالات بہت اچھے ہیں،میری کوشش ہوگی کہ سیکریٹری سرمایہ کاری بورڈ فیڈریشن عہدیداران سے رابطے میں رہے،لائیواسٹاک،صنعت اوردیگرسیکٹرزمیں تاجروں اور سرمایہ کاروں کے ساتھ تعاون کریں گے۔انہوں نے کہا کہ انڈسٹری کی بہتری سے ہی معیشت میں بہتری آئے گی، کراچی کے حالات اب بہت بہتر ہیں،انڈسٹری کی بہتری کیلئے حالات انتہائی سازگار ہیں،کراچی میں پانی کا مسئلہ اولین ترجیح ہے،کے 4منصوبہ جلد مکمل ہوجائے گا 50فیصد سندھ حکومت اور 50 فیصدوفاق دے رہا ہے،ٹریٹمنٹ پلانٹ لگائے جائیں گے،صفائی کے نظام کو بھی بہتر کررہے ہیں، ٹرانسپورٹ کے مسائل حل کریں گے،پانی کی ڈسٹری بیوشن کو بھی بہتر کرنے کی ضرورت ہے کے 4 کے مکمل ہوتے ہی اس پر کام کیاجائے گا،پانی کی ڈسٹریبیوشن کے حوالے سے ورلڈ بینک کا پروجیکٹ ہے،ملیر ندی پر کراچی کا نیا سب سے بڑا روڈ بنانے کا منصوبہ ہے،شہر کے مختلف مقامات اور پالش پر انڈر گراو¿نڈ پارکنگ بنانے کامنصوبہ تیار کیاگیا ہے،350 اسکولز پبلک پرائیوٹ پارٹنرز شپ سے چل رہے ہیں، پبلک پرائیوٹ پارٹنرز شپ کے ساتھ کئی پروجیکٹ پر کام کررہےہیں،پبلک پرائیوٹ پارٹنرز شپ کے تحت اسپیشل ٹیکنالوجی زون بنانے کا منصوبہ بنارہے ہیں یہ پاکستان کا پہلا آٹی زون ہوگا۔اس موقع پرایس ایم منیر نے کہا کہ گورکھ ہل کو جلد سے جلد فعال کیا جائے خیرپور کی طرح سندھ میں مزید اکنامک زون بنائے جائیں۔قائمقام صدر فیڈریشن چیمبرنوراحمدخان نے کہاکہ سوشل سیکورٹی، لیبرسمیت تمام ڈیپارٹمنٹ کا ون ونڈو سسٹم متعارف کرایاجائے،ون ونڈو سسٹم سے صنعتکاروں کا ٹائم بچے گا،کراچی کے داخلی راستوں پرسی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب کی جائے۔خالد تواب نے کہا کہ انڈسٹریل فسیلیٹیشن بورڈ بنایاجائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -