نواز شریف سے سر کا خطاب واپس لینے کی درخواست پر سماعت،وفاقی حکومت نے مخالفت کر دی

نواز شریف سے سر کا خطاب واپس لینے کی درخواست پر سماعت،وفاقی حکومت نے مخالفت ...
نواز شریف سے سر کا خطاب واپس لینے کی درخواست پر سماعت،وفاقی حکومت نے مخالفت کر دی

  

لاہور(ڈیلی پاکستا ن آن لائن)لاہور ہائیکورٹ میں سابق وزیراعظم نوازشریف کو سر کا خطاب دینے کیخلاف کیس میں وفاقی حکومت نے نواز شریف سے سر کا خطاب واپس لینے کی درخواست کی مخالفت کر دی،لاہور وفاقی حکومت نے اپنے جواب میں درخواست کے قابل سماعت ہونے پر اعتراض کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کو سر کا خطاب دینے کیخلاف کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس مامون الرشید نے جاوید اقبال جعفری کی درخواست پر سماعت کی،درخواست میں موقف اختیار کیاگیا ہے کہ نواز شریف نے سیاسی اثر و رسوخ سے سر کا خطاب حاصل کیا،نواز شریف منی لانڈرنگ میں ملوث رہے،آرٹیکل62، 63 کے تحت وہ اہل نہیں رہے،درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت نواز شریف کو دیا گیا سر کا خطاب واپس لینے کا حکم دے،وفاقی حکومت نے نواز شریف سے سر کا خطاب واپس لینے کی درخواست کی مخالفت کر دی، وفاقی حکومت نے اپنے جواب میں درخواست کے قابل سماعت ہونے پر اعتراض کیا ہے،ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ آرٹیکل 259کے تحت صدرپاکستان کی مشاورت سے نوازشریف کوبرطانیہ نے یہ خطاب دیا،درخواست گزار نے معاملے کے 17 سال بعد عدالت سے رجوع کیا، وکیل وفاقی حکومت نے کہا کہ درخواست ناقابل سماعت قرار دےکر مسترد کی جائے۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور