یہ ریسکیو 1122 خیبر پختونخوا کا تیراک ہے جس کی بہن کا جنازہ تیار ہے لیکن یہ ڈیم میں ڈوبی ہوئی 3 بہنوں کی تلاش کے باعث اپنی بہن کے جنازے میں شریک نہیں ہوسکا

یہ ریسکیو 1122 خیبر پختونخوا کا تیراک ہے جس کی بہن کا جنازہ تیار ہے لیکن یہ ڈیم ...
یہ ریسکیو 1122 خیبر پختونخوا کا تیراک ہے جس کی بہن کا جنازہ تیار ہے لیکن یہ ڈیم میں ڈوبی ہوئی 3 بہنوں کی تلاش کے باعث اپنی بہن کے جنازے میں شریک نہیں ہوسکا

  

صوابی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے عوام کو سرکاری ملازمین سے عمومی طور پر یہ شکایت رہتی ہے کہ وہ اپنے فرائض کی سرانجام دہی میں غفلت کا مظاہرہ کرتے ہیں لیکن خیبر پختونخوا میں ریسکیو 1122 کے تیراک ظاہر شاہ نے اس تاثر کو بڑی قربانی کے ذریعے غلط ثابت کردیا ہے۔

ریسکیو 1122 خیبر پختونخوا نے ٹوئٹر پر اپنے تیراک ظاہر شاہ کی کہانی شیئر کی ہے جس کے مطابق ریسکیو کے تیراک کی بہن کا انتقال ہوگیا تھا جس کا جنازہ گھر پر تیار تھا لیکن وہ اپنی ڈیوٹی کے باعث اس میں شریک نہیں ہوسکا۔ ’ گھرمیں بہن کا جنازہ تیار ہو اور دوسرے کی بہن بیٹی کے جنازے کے لیے جسد خاکی کی تلاش میں سرگرداں ، یہ ہے ریسکیو 1122 کا تیراک ظاہرشاہ جو کندل ڈیم صوابی میں ڈوبنے والی تین بہنوں کی تلاش کے باعث اپنی بہن کی تدفین کے لیے بھی شامل نہ ہوسکا، شاید اس سے کسی کو فرق نہ پڑے لیکن دنیا کے لیے یہ ایک مثال ہے‘۔

ٹوئٹر@KRescue1122

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /صوابی