انتہاء پسندی اور دہشت گردی نے مسلم امۃ کو کمزور کیا،وزیر اعظم غزوہ بدر و اُحد کے حوالہ سے دئیے گئے بیان پر وضاحت اور معذرت کریں:علامہ طاہر اشرفی

انتہاء پسندی اور دہشت گردی نے مسلم امۃ کو کمزور کیا،وزیر اعظم غزوہ بدر و اُحد ...
انتہاء پسندی اور دہشت گردی نے مسلم امۃ کو کمزور کیا،وزیر اعظم غزوہ بدر و اُحد کے حوالہ سے دئیے گئے بیان پر وضاحت اور معذرت کریں:علامہ طاہر اشرفی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)انتہاء پسندی ، دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف اور بین المذاہب مکالمہ کیلئے چارٹر مکۃ المکرمہ کی مکمل توثیق کرتے ہیں ، انتہاء پسندی اور دہشت گردی نے مسلم امۃ کو کمزور کیا ہے ، مکۃ المکرمہ اور سعودی عرب کے دیگر شہروں اور گذشتہ روز ابہا ائیر پورٹ پر میزائل حملوں کی مذمت کرتی ہے اور یہ حملے ناقابل قبول ہیں،عمران خان کو غزوہ بدر و اُحد کے حوالہ سے دئیے گئے بیان پر وضاحت اور معذرت کرنی چاہیے،غیر جانبدارانہ احتساب اور قومی کمیشن بنانے کی حمایت کرتے ہیں ۔

یہ بات پاکستان علماء کونسل اسلام آباد کے زیر اہتمام مختلف مکاتب فکر کے علماء و مشائخ کے اعزاز میں ہونے والی عید ملن پارٹی کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قائدین نے کہی ، پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین اور وفاق المساجد وا لمدارس پاکستان کے صدر حافظ محمد طاہر محمود اشرفی ، مولانا نعمان حاشر ، مولانا طاہر عقیل اعوان ، مولانا ابو بکر صابری ، مولانا ممتاز ربانی، مولانا قاسم قاسمی ، مولانا نائب خان ، مولانا شہباز احمد ، مولانا الیاس مسلم ، مولانا اسلم قادری، مولانا اسید الرحمن سعید، مولانا شفیع قاسمی اور دیگر نے کہا کہ امت مسلمہ کے اصلاح احوال کیلئے علماء و مشائخ و سیاسی قائدین کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا، عالم کفر پاکستان اور اسلامی ممالک کے خلاف سازشیں کر رہا ہے ، خلیج میں بحران پیدا کرنے کا مقصد سعودی عرب کو کمزور کرنا ہے ، افغانستان میں داعش اور پاکستان دشمن قوتوں کو مضبوط بنانے کی سازشیں ہو رہی ہیں، پاکستان سعودی عرب اور دیگر اسلامی ممالک میں فرقہ وارانہ تشدد پھیلانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں،ان حالات میں امت مسلمہ کی وحدت اور اتحاد کی ضرورت ہے،مکۃ المکرمہ میں رابطہ عالم اسلامی،اسلامی تعاون تنظیم کے تمام فیصلوں کی مکمل تائید و حمایت کرتے ہیں،رابطہ عالم اسلامی کے تحت انتہاء پسندی،دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے خاتمے اور اسلامک فوبیا کے خلاف چارٹر آف مکۃ المکرمہ کی مکمل توثیق اور تائید کرتے ہیں اور چارٹر آف مکۃ المکرمہ کو او آئی سی اور اقوام متحدہ سے قانونی شکل دینے کا مطالبہ کرتے ہیں،بین المسالک ہم آہنگی اور بین المذاہب مکالمہ وقت کی ضرورت ہے، تمام مسالک و مذاہب کے قائدین کو اس کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے ۔

ایک سوال کے جواب میں حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ پاکستان علماء کونسل اور اس کی حلیف جماعتیں عمران خان کے مدینہ منورہ کی ریاست بنانے کے عزم کی تائید کرتی ہیں حکومت گرانے کے کسی بھی عمل کی تائید نہیں کی جا سکتی ، گذشتہ رات عمران خان نے غزوہ اُحد اور بدر کے حوالہ سے جوبات کی اس کی وضاحت اور معذرت کی ضرورت ہے،عمران خان کی بات سے مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی ہے،ہم امید کرتے ہیں کہ عمران خان اپنی بات کی وضاحت بھی کریں گے اور مسلمانوں سے معذرت بھی کریں گے۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ غیر جانبدارانہ احتساب پوری قوم کا مطالبہ ہے،آج قوم معاشی طور پر اس قدر کمزور کیوں ہے،اس کیلئے ہر قسم کے کمیشن کی تائید کرتے ہیں، بجٹ میں عوام کیلئے ریلیف ہونا چاہیے تھا بجٹ میں آنے والی بہت ساری چیزوں سے اتفاق نہیں کرتے،دفاعی بجٹ میں کمی کی کسی صورت حمایت نہیں کی جا سکتی، پاکستان کے خلاف اسرائیل اور بھارت سازشوں میں مصروف ہیں،ان حالات میں دفاعی بجٹ میں اضافہ ہونا چاہیے، افواج پاکستان نے ہمیشہ قربانیاں دی ہیں،بجٹ کے معاملہ میں افواج پاکستان کی قربانی کا جذبہ اپنی جگہ لیکن قوم دفاعی بجٹ میں کمی قبول نہیں کرے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان علماء کونسل کل 13 جون کو مرکزی مجلس شوریٰ کے اجلاس میں اہم فیصلے کرے گی۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد