پٹرولیم مصنوعات کی قلت کی چھان بین جاری ہے،ہمایوں اختر

پٹرولیم مصنوعات کی قلت کی چھان بین جاری ہے،ہمایوں اختر

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) تحریک انصاف کے سینئر مرکزی رہنما و سابق وفاقی وزیر ہمایوں اختر خان نے کہا ہے کہ سندھ حکومت صوبے میں کورونا وائرس کے حوالے سے مکمل لاک ڈاؤن سمیت جو مرضی فیصلہ کرے اس پر وفاق کی پہلے کوئی بندش تھی نہ اب ہے،وزیر اعظم نے پیٹرولیم مصنوعات کی قلت کا سختی سے نوٹس لیا ہے اور حقائق سے آگاہی کیلئے چھان بین جاری ہے،مسلم لیگ (ن) کے 2013 سے 2018ء کے دورمیں 14ارب ڈالر کا انتہائی مہنگا کمرشل قرضہ لیا گیا، قرضوں کے حوالے سے کمیشن کی رپورٹ ملک کیلئے کارآمد ثابت ہو گی۔

پارٹی رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئے ہمایوں اختر خان نے کہا کہ کورونا وائرس کے حوالے سے پوری دنیا میں جو سٹینڈرز اپنائے گئے ہیں وفاقی حکومت نے ان کی پیروی کی ہے، ہم نے ہر طرح کے ضروری سامان کی دستیابی کو یقینی بنانے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سمارٹ لاک ڈاؤن کے تحت 700مقامات بند ہیں جہاں پر ٹیسٹنگ، ٹریکنگ اور دیگر ضروری اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ سندھ حکومت صوبے میں مکمل لاک ڈاؤن سمیت جو مرضی فیصلہ کرے اس پر وفاق کی کوئی بندش نہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قلت کو ختم کرنے کے لئے حکومت متحرک ہے، وزیر اعظم عمران خان نے بھی اس کا سختی سے نوٹس لیا ہے اور حقائق کی چھان بین جاری ہے۔ ہمایوں اختر خان نے کہا کہ ہم نے ملک کو درست سمت میں لے کر جانا ہے اور یہ اس وقت ممکن ہوگا جب ہم اپنی اصلاح کریں گے۔ مسلم لیگ (ن) کے سابقہ دور میں 14ارب ڈالر کاانتہائی مہنگا کمرشل قرضہ لیا گیا۔امید ہے کہ قرضوں کے حوالے سے کمشن کی رپورٹ جلد آئے گی اور یہ ملک کیلئے بھی کارآمد ثابت ہو گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -