حکومت نے لیگی رہنماؤں کی زندگیاں خطرے میں ڈال دیں،عطا ء اللہ تارڑ

حکومت نے لیگی رہنماؤں کی زندگیاں خطرے میں ڈال دیں،عطا ء اللہ تارڑ

  

لاہور (آن لائن) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما عطاء اللہ تارڑ نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت نے نیب کو استعمال کر کے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی گرفتاری کی منصوبہ بندی کی تھی اور شہزاد اکبر کی لاہور میں موجودگی ایک سوالیہ نشان ہے۔ ماڈل ٹاؤن میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نیب نے شہباز شریف سے 2 جون کو پوچھ گچھ کرنا تھی جبکہ 28 مئی کو شہباز شریف کے وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کا کیا جواز تھا۔ انہوں نے کہا کہ نیب ہر وقت شہباز شریف کے بارے میں ٹی ٹی کی رٹ لگاتی ہے اور اگر نیب شہباز شریف کے خلاف ٹی ٹی کا کوئی ایک ثبوت فراہم کردے تو وہ سیاست سے مستعفی ہوجائینگے۔ شہباز شریف 133 دن نیب کی حراست میں رہے۔ نیب ان دنوں میں کرپشن کا کوئی ایک الزام ثابت نہیں کرسکی۔ عطاء اللہ تارڑ نے کہا کہ حکومت نے لیگی رہنماؤں اور کارکنوں کی زندگیاں خطرے میں ڈال دی ہیں۔ گزشتہ پونے دو سال سے کون سی ایسی انکوائری ہے جو نیب کے ہاتھوں میں مکمل نہیں ہوسکی۔

عطاء اللہ تارڑ

مزید :

صفحہ آخر -