پٹرول بحران جاری،اوگرانے تیل کا ذخیرہ نہ رکھنے پر 5کمپنیوں کو ساڑھے 3کروڑ جرمانہ کر دیا

  پٹرول بحران جاری،اوگرانے تیل کا ذخیرہ نہ رکھنے پر 5کمپنیوں کو ساڑھے 3کروڑ ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) ملک بھر میں پٹرول کا بحران جاری، آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے5 آئل کمپنیوں کو تیل کا ذخیرہ نہ رکھنے پر 3کروڑ 50لاکھ جرمانے کردئیے۔تفصیلات کے مطابق ملک کے مختلف شہروں میں عوام کو گزشتہ روز بھی پٹرول کی تلاش دشواری کا سامنا رہا، یکم جون کو پیٹرول کی قیمت کم ہونے کے بعد سے بڑی تعداد میں بند پٹرول پمپس گزشتہ روز بھی نہ کھلے جس کے باعث لاہور، کراچی،پشاور، ملتان، سرگودھا، گجرات، ملتان، ٹھٹھہ،پڈعیدن، غذر، لوئر دیر اور سوات میں بھی بیشتر پمپس بند رہے۔نجی ٹی وی کے مطابق حیسکول پرائیویٹ لمیٹڈ کو 50 لاکھ، گیس اینڈ آئل پاکستان لمیٹڈ کو 50 لاکھ روپے جرمانہ کیا ہے۔ لائسنس شرائط کی خلاف ورزی پر ٹوٹل پارکو پاکستان لمیٹڈ کو ایک کروڑ روپے جبکہ شیل پاکستان کو تیل سٹاک نہ رکھنے پر 1 کروڑ روپے اورپوما انرجی پرائیویٹ لمیٹڈ پر 50 لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا گیا۔

پٹرول بحران/جرمانہ

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر پٹرولیم عمر ایوب نے پشاور ہائیکورٹ کو ذخیرہ اندوزوں کیخلاف کارروائی کی یقین دہانی کرا دی۔پشاور ہائیکورٹ میں پٹرول اور آٹا بحران کے خلاف دائر درخواست پر سماعت جسٹس قیصر رشید اور جسٹس احمد علی پر مشتمل 2 رکنی بینچ نے کی۔ وفاقی وزیر پٹرولیم عمر ایوب عدالت کے طلب کرنے پر پیش ہوئے۔ جسٹس قیصر رشید کا کہنا تھا کہ عوام تکلیف میں ہے، بے فائدہ میٹنگز کی جا رہی ہیں، فارمل کمیٹی اور کمیشن نہیں چاہتے، توجہ چاہتے ہیں کہ لوگوں کی تکلیف کو کم کریں۔جسٹس قیصر رشید کا وفاقی وزیر کو کہنا تھا کہ نیب کی کارکردگی زیرو ہے، چیئرمین نیب کو بتائیں کہ ان کی کارکردگی سے خوش نہیں، عدالت نے وفاقی وزیر پٹرولیم اور سیکرٹری پٹرولیم کو ہدایت کی کہ عوام کی تکلیف کا مدوا کریں۔وفاقی وزیر پٹرولیم عمر ایوب نے عدالت کو بتایا کہ پٹرول کمپنیوں نے مافیا بنایا ہوا ہے، 30 فیصد پٹرول کی مانگ میں اضافہ بھی ہوا ہے، 10 دن کی سپلائی اب بھی موجود ہے، مافیا عوام تک ثمرات پہنچنے نہیں دے رہا۔ عدالت کی جانب سے ذخیرہ اندوزی کے خلاف قانون سازی سمیت ملوث افراد کی نشاندہی کی بھی ہدایت کی گئی۔ عدالت نے کیس کی سماعت 17 جون تک ملتوی کر دی۔

پٹرول بحران کیس

مزید :

صفحہ اول -