ہسپتالوں میں گنجائش ختم، حکومت معلومات فراہم کرے،ثمر بلور

ہسپتالوں میں گنجائش ختم، حکومت معلومات فراہم کرے،ثمر بلور

  

پشاور(سٹی رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی ترجمان ثمرہارون بلور نے کہا ہے کہ کورونا وبا کے بعد پشاور کے سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کی گنجائش ختم ہورہی ہے لیکن حکومتی دعوے کچھ اور ہیں۔ دیگر مریضوں کیلئے بھی کوئی معلومات نہیں دی جارہی کہ وہ اپنے مریضوں کو کہاں اور کس ہسپتال میں لے کر جائیں۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی کی صوبائی ترجمان نے کہا ہے کہ حیات آباد میڈیکلک کمپلیکس اور خیبرٹیچنگ ہسپتالوں میں گنجائش تقریباً ختم ہورہی ہے لیکن حکومتی ترجمان اور وزیرصحت سوشل میڈیا اور پریس کانفرنسز میں اور دعوے کررہے ہیں۔ حقیقتیں وہ نہیں جو مشیر اور وزراء بتارہے ہیں۔ پشاور کے عوام اپنے مریضوں کو ہسپتال در ہسپتال منتقل کرنے اور اس شدید گرمی میں ذلیل و خوار ہورہے ہیں۔ ابھی تک حکومت کی جانب سے یہ بھی نہیں بتایا جارہا کہ کورونا کی وجہ سے کون سے او پی ڈیز بند ہیں اور کون سے کھلے ہیں۔ پشاور کے ہسپتالوں کی حالت بدترین ہوچکی ہے۔ ثمرہارون بلور نے مطالبہ کیا کہ وزیرصحت اور مشیر اطلاعات میڈیا پر آکر بتائیں کہ کون سے ہسپتال میں کتنی گنجائش باقی ہے اور کورونا کے علاوہ دیگر مریض کہاں جائیں؟ اس کے ساتھ ساتھ نجی ہسپتال لاکھوں روپے غریب مریضوں سے لے رہے ہیں، حکومت ان کے خلاف کیوں کارروائی نہیں کررہی۔ کیا انکے لئے کوئی قانون نہیں؟ اے این پی کی صوبائی ترجمان نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ ایک ویب سائٹ بنائی جائے اور اس پر ہسپتالوں کے روزانہ کی بنیاد پر معلومات اور مریضوں کی تعداد عوام سے شیئر کی جائیں تاکہ انہیں معلوم ہو کہ وہ اپنے مریض کوعلاج کیلئے کس ہسپتال میں لے کر جائیں

مزید :

پشاورصفحہ آخر -