گلستان جوہر، رینجرز پر حملے کا مقدمہ سی ٹی ڈی نے درج کرلیا

گلستان جوہر، رینجرز پر حملے کا مقدمہ سی ٹی ڈی نے درج کرلیا

  

کراچی (کرائم رپورٹر) کراچی کے علاقے گلستان جوہر میں گزشتہ شام بھٹائی رینجرز کی موبائل پر حملے کا مقدمہ انسداد دہشت گردی کی دفعات کے تحت سی ٹی ڈی نے درج کرلیا ہے۔گلستان جوہر تھانے میں درج ایف آئی آر نمبر 69/2020 میں بھٹائی رینجرز 72 ونگ کے حوالے دار محمد حسین مدعی ہیں۔ مدعی کی فراہم کردہ تحریری درخواست پر ایف آئی آر 3/4/5 ایکسپلوزیو ایکٹ، سیون اے ٹی اے اور تعزیرات پاکستان کی دفعہ 34/ 427/186/324 کے تحت درج کی گئی ہے۔مدعی کے مطابق 10 جون کی شام ان کی ڈیوٹی کورونا وائرس کے دوران شہریوں کے ہاتھوں کو سنیٹائز کرانے کے لیے مخصوص بھٹائی رینجرز کی گاڑی پر بطور موبائل کمانڈر تھی۔ وقوعہ کے وقت وہ سرکاری موبائل میں صفورہ سے کامران چورنگی گلستان جوہر کی طرف جا رہے تھے کہ بلاک 5 میں پیٹرول پمپ کے ساتھ موجود ٹائر شاپ پر ٹائر میں ہوا بھرنے کے لیے ڈرائیور عبدالروف نے گاڑی روکی۔مدعی کے مطابق وہ ڈرائیور کے ساتھ گاڑی کی اگلی نشست پر بیٹھے تھے کہ موٹرسائیکل پر سوار 2 ملزمان نے انہیں جان سے مارنے اور دہشت گردی پھیلانے کی غرض سے ہینڈ گرنیڈ گاڑی کے اندر پھینکا جو ان کے قریب آ کر گرا۔مدعی کے مطابق وہ فوری طور پر دروازہ کھول کر گاڑی سے نکلے ہی تھے کہ دھماکہ ہوگیا۔ ایف آئی آر کے مطابق ہینڈ گرنیڈ پھٹنے سے ایک چھرا لگنے سے ان کی کمر پر زخم آیا جبکہ گاڑی کے ڈیش بورڈ، بونٹ، سیٹوں اور دیگر جگہوں کو نقصان پہنچا اور چھت میں سوراخ ہوگئے۔مدعی کے مطابق حملہ آوروں میں سے ایک ملزم نے شلوار قمیض پہنی ہوئی تھی۔سی ٹی ڈی کے مطابق واردات کی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -