"انگلینڈ کے خلاف سیریز آسان نہیں ہوگی کیونکہ۔۔۔" سکواڈ کے اعلان کے بعد چیف سلیکٹر اور ہیڈ کوچ کا بیان بھی آگیا

"انگلینڈ کے خلاف سیریز آسان نہیں ہوگی کیونکہ۔۔۔" سکواڈ کے اعلان کے بعد چیف ...

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی کرکٹ ٹیم کے چیف سلیکٹر اور ہیڈ کوچ مصباح الحق کا کہنا ہے کہ انگلینڈ کے خلاف سیریز آسان نہیں ہوگی کیونکہ مارچ سے کھلاڑیوں نے کسی قسم کی مسابقتی کرکٹ میں حصہ نہیں لیا۔

انہوں نے کہاسلیکٹرز نےایک ایسے اسکواڈ کا انتخاب کیا ہے جس سے انگلینڈ میں طویل اور محدود دونوں طرزکی کرکٹ میں بہتر کارکردگی کی توقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ کافی عرصے سے کھلاڑیوں کی میدان سے دوری ایک چیلنج ہے تاہم پرامید ہیں کہ انگلینڈ میں ایک ماہ کے دوران بھرپور ٹریننگ کے باعث مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔

پی سی بی کی جانب سے جاری کردی پریس ریلیز کے مطابق مصباح الحق نے واضح کیا ہے کہ اسکواڈ کے انتخاب کے دوران سلیکٹرز کی ترجیح طویل طرز کی کرکٹ رہی کیونکہ پاکستان کو آئندہ 9 ماہ ٹیسٹ کرکٹ کھیلنی ہے۔انہوں نے کہا کہ سیریز میں شامل 3 ٹی ٹونٹی میچز تو آئی سی سی ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کےمیچوں کے بعد ہوں گے۔

قومی کرکٹ ٹیم کے چیف سلیکٹر کا کہنا ہے کہ ہمارے کھالڑیوں نے مارچ سے کسی قسم کی مسابقتی کرکٹ میں حصہ نہیں لیا جبکہ میزبان ٹیم پاکستان سے پہلے ویسٹ انڈیز سے کھیلے گی لہذا انگلینڈ کے خلاف یہ سیریز آسان نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا  ہمیں پہلے ٹیسٹ سے قبل زیادہ سے زیادہ ٹریننگ سیشنز میں حصہ لینا ہوگا۔

مصباح الحق نے کہا کہ کھلاڑیوں کا انتخاب مستقبل کو پیش نظر رکھ کر کیا گیا ہے۔ ان کی خواہش ہے کہ نوجوان کرکٹرز، یونس خان اور مشتاق احمد کے وسیع تجربے سےمستفید ہوں۔

انہوں نے کہا کہ سہیل خان کی واپسی قومی کرکٹ ٹیم کے فاسٹ باؤلنگ ڈیپارٹمنٹ کومزید تقویت بخشے گی۔ انہوں نے 2016میں انگلینڈ کے خالف آخری مرتبہ کھیلتے ہوئے2 بار پانچ یا اس سے زیادہ وکٹیں حاصل کیں تھی۔ انہوں نے کہا کہ سلیکٹرز کے مطابق سہیل خان نے قائد اعظم ٹرافی

20-2019میں اپنے اعداد و شمار سے کہیں بہتر باؤلنگ کا مظاہرہ کیا۔

مزید :

کھیل -