کورونا سے متاثرہ 22 سالہ لڑکی کے پھیپھڑوں کے ساتھ کیا ہوا؟ ایسی تفصیلات کہ انسان دہشت زدہ ہوجائے

کورونا سے متاثرہ 22 سالہ لڑکی کے پھیپھڑوں کے ساتھ کیا ہوا؟ ایسی تفصیلات کہ ...
کورونا سے متاثرہ 22 سالہ لڑکی کے پھیپھڑوں کے ساتھ کیا ہوا؟ ایسی تفصیلات کہ انسان دہشت زدہ ہوجائے

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کئی کیسز میں کورونا وائرس مریضوں کے پھیپھڑوں، گردوں اور دیگر اعضاءپر ایسے منفی اثرات مرتب کرتا ہے کہ صحت مندی کے بعد بھی وہ سدا کے بیمار ہو کر رہ جاتے ہیں۔ ایسا ہی ایک کیس امریکہ میں سامنے آیا ہے کہ سن کر ہی آدمی وحشت زدہ رہ جائے۔ میل آن لائن کے مطابق اس مریض لڑکی کی عمر 22سال کے لگ بھگ تھی جس کے دونوں پھیپھڑے کورونا وائرس کی وجہ سے ناکارہ ہو گئے اور اس میں پھیپھڑے ٹرانسپلانٹ کرنے پڑ گئے۔

رپورٹ کے مطابق اس لڑکی کو نارتھ ویسٹرن میموریل ہسپتال کے آئی سی یو میں رکھا گیا تھا جہاں اس کی جان تو بچ گئی لیکن اس کے پھیپھڑوں میں سوراخ ہو گئے اور وہ اس کی چھاتی میں چپک کر رہ گئے۔ اس کے علاوہ ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ اس کے پھیپھڑوں میں ایک مواد بھر گیا تھا اور وہ بالکل ناکارہ ہو گئے تھے۔ اگر اس کو فوری طور پر دونوں نئے پھیپھڑے نہ لگائے جاتے تو اس کی موت واقع ہو جاتی۔ ڈاکٹر نے محض 48گھنٹے کے اندر اس لڑکی کے جسم سے مطابقت رکھنے والے پھیپھڑے تلاش کیے اور ٹرانسپلانٹ کے ذریعے اس کے جسم میں لگا دیئے۔ ڈاکٹروں کے مطابق لڑکی اب روبہ صحت ہے۔ اس کے کیس کے متعلق ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ اس لڑکی کا شمار دنیا کے ان چند لوگوں میں ہو گا جنہیں کورونا وائرس سے اس قدر سنگین نقصان پہنچا مگر ان کی جان بچ گئی۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -