مسلم لیگ(ن) نے سرکاری ملازمین کے مطالبات کی حمایت کردی، تنخواہوں میں20سے 30فیصد اضافے کا مطالبہ

مسلم لیگ(ن) نے سرکاری ملازمین کے مطالبات کی حمایت کردی، تنخواہوں میں20سے ...
مسلم لیگ(ن) نے سرکاری ملازمین کے مطالبات کی حمایت کردی، تنخواہوں میں20سے 30فیصد اضافے کا مطالبہ

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) مسلم لیگ(ن) کے سینئر رہنما اور رکن قومی اسمبلی احسن اقبال نے کہا ہے کہ ن لیگ سرکاری ملازمین کے تنخواہوں میں اضافے سے متعلق مطالبات کی حمایت کرتی ہے اور ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ وفاقی بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 20سے30فیصد اضافہ کیا جانا چاہئے۔ حکومت نے بجٹ پیش کرکے کمال ہوشیاری سے پاکستان کے ساتھ ایک دھوکیا کیا ہے۔

لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے لیگی رہنما احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی ) کی حکومت نے تین سال میں افراط زر کو آسمان پر پہنچا دیا ہے، حکومت کے اقتصادی دعووں پرکاش ہم یقین کرسکتے،دعووں سے ساتھ آپ کبھی بھی کامیابی حاصل نہیں کرسکتے،بجٹ کے دعووں کی حقیقت شہباز شریف پیر کو بتائیں گے۔

احسن اقبال نے کہا کہ حکومت ہوا کے دوش پر چل رہی ہے جہاں سے ہواآئی کشتی وہاں چلی جاتی ہے،آج کوئی پانچ سالہ منصوبہ ہے اور نہ ہی کوئی لانگ ٹرم پروگرام ہے،ہمارے دور میں وژن 2020اور دوسرے لانگ ٹرم منصوبے تھے اور ہماری حکومت نے طویل المدت منصوبوں کی پلاننگ کی تھی۔پی ٹی آئی کو پتہ چل چکا ہے کہ اگلے الیکشن میں ان کا سیاسی جنازہ اٹھنے والا ہے۔

لیگی رہنما نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت کے دور میں بھارت نے کشمیر کی حیثیت ہی تبدیل کردی ہے جبکہ پہلے کبھی بھارت کو ہمت نہ تھی کہ وہ کشمیر کو ہڑپ کرلے۔اگر حکومت کمزور نہیں ہوئی تو اس نے ان سے انڈر سٹینڈنگ کرلی ہے،اندرون خانہ کوئی نہ کوئی معاملہ تو ہے جس پر بات چیت ہوئی ہے،موجودہ حکومت نے بھارت کی خوشنودی کے لئے پاکستان کی عزت کا جنازہ نکال دیا ہے اور کشمیرکو بھی بھارت کی جھولی میں خوشی خوشی ڈال دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بجٹ سے ایک روز پہلے دو بل قوانین بلڈوز کرکے پاس کرائے گئے ہیں جن میں سے ایک بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو این آر او دینے کا تھا،عالمی عدالت میں پاکستان کے وکیل نے کلبھوشن یادیو کے خلاف مقدمہ لڑا تھااور وہاں کہا تھا کہ پاکستان کی ہائی کورٹ ایسے ملزمان کی سزا کا جائزہ لیتی ہے مگر حکومت اب کلبھوشن کو این آراو دے رہی ہے۔

احسن اقبال نے مزید کہا کہ حکومت کی نالائقی عوام تین سال سے بھگت رہی ہے،حکومت بتائے کہ کیا اس بجٹ کے بعد منی بجٹ لائیں گے، بجلی کی قیمتوں میں کتنا اضافہ ہوگااور کیاعوام کو سستی اشیائے ضروریہ فراہم کرسکیں گے؟؟

انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیرفواد چوہدری ہمیں ٹیکنالوجی پڑھانے کی کوشش نہ کریں میں خود انجینئر ہوں اور فواد چوہدری سے زیادہ جانتا ہوں، الیکٹرانک ووٹنگ سے بیرونی مداخلت کے دروازے کھل جائیں گے۔

مزید :

قومی -سیاست -علاقائی -پنجاب -لاہور -