ہسپانوی شہر تاراگونا کے گورنر اور ممبر نیشنل اسمبلی سے قونصل جنرل بارسلونا عمران علی چوہدری کی ملاقات

ہسپانوی شہر تاراگونا کے گورنر اور ممبر نیشنل اسمبلی سے قونصل جنرل بارسلونا ...
ہسپانوی شہر تاراگونا کے گورنر اور ممبر نیشنل اسمبلی سے قونصل جنرل بارسلونا عمران علی چوہدری کی ملاقات

  

بارسلونا(ارشد نذیر ساحل ) قونصل جنرل عمران علی نے ہسپانوی شہر تاراگونا کے ڈپٹی گورنر اور ممبر نیشنل اسمبلی سے ملاقات جن دونوں معززین کا تعلق سپین کی سیاسی جماعت سوشلسٹ پارٹی سے ہے۔اس میٹنگ میں قونصل جنرل کے ہمراہ پاکستان سوشلسٹ پارٹی کے رہنما حافظ عبدالرزاق صادق ،محمداقبال چوہدری ،سہیل تنزیل اور تارا گوناکی کاروباری شخصیت چوہدی جمشید بیگہ نے بھی شرکت کی۔

اس اہم ملاقات میں سپین میں موجود پاکستانیوں سے متعلق اہم امور پر بات چیت ہوئی۔ اسی طرح کشمیر میں بھارتی مظالم اور پاکستان کے خلاف ہندوستان کے 15 سالہ پروپیگنڈہ کا ذکر کیا جس کو انڈین کرانیکلز یا یورپی یونین ڈس انفو لیب کا نام دیا گیا۔ قونصل جنرل نے سپین اور پاکستانی حکومت کے اچھے مراسم کو سراہا اور دونوں حکومتی نمائندوں کا شکریہ ادا کیا۔ 

قونصل جنرل نے ڈپٹی گورنر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس کی پہلی لہر کے دوران جہاں پہ سب کچھ بند تھااس دوران واحد پاکستانی قونصلیٹ بارسلونا کھلا رہا۔ اس دوران پاکستانی قونصلیٹ آنے والے سٹاف اور لوگوں کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کا تعاون حاصل رہا اور ان کو قونصلیٹ آنے کے لیے کہیں روکا نہیں گیا۔ اس میٹنگ میں قونصل جنرل نے اپوائنمنٹ اورکی زیر التوا درخواستوں کی منظوری میں تاخیر کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا۔ ڈپٹی گورنر نے یقین دلایا کہ وہ لاک ڈاو¿ن کے بعد اس عمل کو تیز کرنے کا ارادہ کر رہے ہیں۔ 

 فریقین نے دوہری شہریت کے اہم موضوع پر بھی تبادلہ خیال کیا اور اپنی اپنی حکومتوں سے اس مسئلہ پر بات شروع کرنے پر اتفاق کیا۔ قونصل جنرل نے اس بات پر زور دیا کہ کم از کم ابتدائی عمل شروع کیا جانا چاہئے تاکہ اس معاملے پر پیش رفت ہو سکے۔ ڈپٹی گورنر اور معزز پارلیمنٹیرین نے اس تجویز پر اتفاق کیا۔قونصل جنرل عمران علی نے سوسائٹی میں پھیلے دقیانوسی تاثر کی نفی کرتے ہوئے اس بات کی وضاحت کی کہ خواتین ہر شعبے میں مردوں کے شانہ بشانہ کام کر رہی ہیں۔ اس کی ایک واضح مثال قونصلیٹ سے ملتی ہے جہاں پے اکثریت میں خواتین ورکرز ہیں۔ 

مزید :

تارکین پاکستان -