جنوبی وزیرستان، کالی کھانسی نے تباہی مچادی، ضلعی انتظامیہ اقتدار کی جنگ میں مصروف

جنوبی وزیرستان، کالی کھانسی نے تباہی مچادی، ضلعی انتظامیہ اقتدار کی جنگ میں ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


     ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبیوزیرستان ضلع لوئر جنوبی وزیرستان میں کالی کھانسی نے تباہی مچادی، محکمہ ہیلتھ جنوبی وزیرستان کے غفلت کے باعث ہر گھر میں 8سال سے لیکر تین ماہ تک چھوٹے کمسن بچے کھانسی کی وجہ سے انتہائی تکلیف میں مبتلا ہوگئے ہیں۔محکمہ ہیلتھ کے مطابق موجودہ  کالی کھانسی کے مرض 40 دنوں تک بچوں میں برقرار رہیگی کیونکہ مارکیٹ میں اج تک کالی کھانسی کے ویکسین اور دیگر ادویات ناپید ہیں البتہ سرکاری ہیلتھ سنٹرز میں پیناڈال اور بروفن کے زریعے سے کالی کھانسی کی بخار کو کنٹرول کیاجارہا ہے محکمہ ہیلتھ ذرائع کے مطابق مذکورہ مرض میں سینکڑوں بچے مبتلا ہوگئے ہیں اور متعدد بچے شدید کھانسی کی وجہ سے زندگی اور موت کے کشمکش میں مبتلا ہیں لیکن بدقسمتی سے مقامی ضلعی انتظامیہ اقتدار کی جنگ میں مصروف ہیں بچے کے والدین محی الدین اور زربت خان وزیر نے کہاکہ مقامی بی ایچ یو اور ڈسپنسریز میں نہ ادویات ملتی ہے اور نہ ڈسپنسرز حاضری دی جاتی ہے محی الدین نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ میرے بچے زمرد وزیر کو پیدائش کے بعد حفاظتی ٹیکہ لگوائی تھی لیکن دوسری ڈوز کی مدت 3 ماہ ہوگئے کہ پورا ہوگئی ہے لیکن گاؤں ڈبکوٹ کے ڈسپنسری میں ڈسپنسر اور دیگر عملہ لیت ولعل سے کام لے رہاہے کبھی کہتے ہیں کہ حفاظتی ٹیکے ناپید ہیں اور کبھی کہتا ہے کہ ہمارے پاس فارغ ٹائم نہیں ہیں اس حوالے سے مذکورہ والدین سمیت علاقہ مکین نے محکمہ ہیلتھ خیبر پختون خوا اور مقامی ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع لوئر جنوبی وزیرستان میں تمام ہیلتھ سنٹرز کو فعال کرکے غیرحاضر سٹاف کیخلاف کاروائی عمل میں لائی جائیں اور عفلت برتنے والے عناصر کے خلاف فوری اقدامات اٹھائیں ورنہ علاقہ مکین احتجاج پر مجبور ہوجائیں گے۔۔