کراچی میں جماعت اسلامی لسانیت کو ہوا دے رہی ہے، نوبزادہ افتخار احمد

  کراچی میں جماعت اسلامی لسانیت کو ہوا دے رہی ہے، نوبزادہ افتخار احمد

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


شاہجمال(نمائندہ پاکستان)کراچی میں جماعت اسلامی لسانیت کو ہوادے رہی ہے اور وڈیرا ازم کا کارڈ کھیل کر کراچی (بقیہ نمبر31صفحہ6پر)
کی تقسیم کی پالیسی پر عمل پیرا ہے اسے ناکامی کاسامنا کرنا پڑے گا پیپلز پارٹی نے ہمیشہ اسمبلیوں میں اکثریت کی حامل جماعتوں کی حمایت کی ہے۔ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر مملکت برائے کشمیر و گلگت بلتستان نوابزادہ افتخار احمد خان نے اپنے تحریری بیان میں کہا ہے کہ 2018میں اس وقت کی حکومت نے بلاول بھٹو زرداری کو قائد حزب اختلاف کا عہدہ سنبھالنے کی پیش کش کی تو انہوں نے ن لیگ کی اکثریت کے پیش نظر میاں شہباز شریف کو اپوزیشن لیڈر بننے کا موقع دیا اسی طرح 2022میں تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کے بعد بھی یہی روایت برقرار رکھی یہ اعلی اخلاقی اور جمہوری رویوں کی مثالیں ہیں انہوں نے جماعت اسلامی کو فاشسٹ قرار دیتے ہوئے کہا کہ کراچی میں جماعت اسلامی کی ایک بھی قومی یا صوبائی نشست نہیں ہے اگر ایسے میں انہیں بلدیات میں کچھ نشستیں مل گئی ہیں تو بھی ایم کیو ایم کے بائیکاٹ کی وجہ سے ملی ہیں ایسے میں کراچی کی اکثریت کی حامل پیپلز پارٹی کی مئیر بنانے کی کوششوں کو کراچی پر قبضہ قرار نہ دیں جماعت اسلامی کو جوڑ توڑ کا پورا حق ہے اگر یہی کام پیپلز پارٹی کرے تو کراچی پر قبضہ کی سازش قرار دیا جارہا ہے اگر یہی کام جماعت اسلامی پی ٹی آئی سے اتحاد کر کے کرے تو کراچی کی جیت قرار دیا جارہا ہے ایسا بیانیہ کراچی میں لسانی تعصب کو بھڑکانے کے مترادف ہے کراچی کے عوام نے پی پی کے جن نمائندوں کو ووٹ دئیے ہیں ان میں کوئی وڈیرا نہیں سب اسی شہر کے باسی ہی اردو بولنے والے اور مڈل کلاس لوگ ہیں مرتضی وہاب کراچی کا بیٹا ہے اس پر وڈیرا ہونے کی پھبتی کسنا سراسر زیادتی ہے یہ پہلی بار نہیں ہے پہلے بھی کئی بار ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے کراچی پر عبدالستار افغانی،نعمت اللہ خان جیسے لوگ مسلط کئے گئے ماضی میں جب بھی جماعت اسلامی کے مئیر منتخب کرائے گئے مرکز میں ڈکٹیٹر شپ تھی فی زمانہ بھی جماعت اسلامی کی کوئی جیت نہیں ہوئی بلکہ حافظ نعیم الرحمن لسانیت پرستی پر مبنی ووٹ بینک کو اپنے ساتھ جوڑ کر لسانیت کی آگ بھڑکا رہے ہیں انہیں ناکامی کا سامنا کرنا پڑے گا کراچی منی پاکستان ہے یہ تمام قومیتوں کا شہر ہے دنیا میں اس طرز کے کسی بھی شہر میں اگر اجارہ داری کی کوشش کامیاب ہوئی ہے تو برقرار نہیں رہ پائی۔

ڈیرہ غازیخان، زرتاج گل گروپ میں دراڑیں، جوائنٹ سیکرٹری پی ٹی آئی ن لیگ میں شامل، نو مئی واقعات کی مذمت، پاک فوج سلامتی، بقاء کی ضامن، عبدالعلیم شاہ
 ڈیرہ غازیخان(سٹی رپورٹر)حکومت نے ٹیکس فری بجٹ دیکر عوامی ریلیف پالیسی کا اعلان کر دیا ہے ان خیالات کا اطہار پاکستان مسلم لیگ (ن) سٹی کے صدر اور سابق رکن صوبائی اسمبلی سید عبدالعلیم شاہ نے پاکستان تحریک انصاف کے سٹی کے جوائنٹ سیکرٹری ا(بقیہ نمبر30صفحہ6پر)
ور زرتاج گل وزیر گروپ کے قریبی ساتھی فیصل اشرف قریشی کی جانب سے اپنی پارٹی اور زرتاج گل گروپ کو چھوڑ کر سید عبدالعلیم شاہ گروپ پاکستان مسلم لیگ ن میں شمولیت کے موقع پر کیا فیصل اشرف قریشی نے 9 مئی کے واقعات کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ جو کام دشمن نہ کرسکا وہ سیاسی مفادات کے حصول کے لئے تحریک انصاف کے لوگوں نے کیا جو انتہائی شرمناک ہے افواج پاکستان ملکی دفاع کی مضبوطی اور سلامتی و بقاء کی ضامن ہے 9 مئی کو اس کی بقاء و سلامتی پر حملہ کرکے سنگین جرم کیا گیا جو ناقابل معافی جرم ہے ایسا کرنے والی اس جماعت کے ساتھ ہمارا چلنا مشکل ہے یہی وجہ ہے کہ ہم اس جماعت سے مکمل علحدگی کا اعلان کرتے ہیں سید عبدالعلیم شاہ، سردار اویس خان لغاری کی قیادت میں پاکستان مسلم لیگ کو مضبوط بنانے کے لئے ہرممکن کردار ادا کریں گے سید عبد العلیم شاہ نے کہا کہ نوجوانوں کو'' ٹکر کے لوگ'' کا نعرہ لگا کر حقیقی تبدیلی کے نام پر بے وقوف بنایا گیا تھا لیکن اب محب وطن نوجوانوں کو آہستہ آہستہ سمجھ آ رہی ہے یہی وجہ ہے کہ اب فتنہ پھیلانے والی تحریک انصاف کا سورج غروب ہوچکا ہے انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے سیاست قربان کرکے ریاست کو بچایا ہے اب عوام کو ریلیف دے رہے ہیں گھی آئل گیس اور آٹا کی قیمتیں کم کر دی ہیں پٹرول مزید سستا کر رہے ہیں دیگر ضرویات زندگی میں بھی کمی لا رہے ہیں ہر صورت ملک و قوم کو خوشحال بنائیں گے آخر میں انہوں نے فیصل اشرف قریشی کی شمیولیت کا خیرمقدم کیا اس موقع پر سابق چیئرمین یوسی 8 سرور صدیقی، سابق ممبر میونسپل کارپوریشن شیخ محمد بلال، سابق وارڈ چیئرمین زکوہ کمیٹی حسن سردار، اسرار پٹھان، شیخ محمد ندیم قریشی، چوہدری امجد حسین، ماشائاللہ (سونو والا) ہارون رشید قریشی، قیصر اشرف قریشی، یاسر اشرف قریشی، عاطف قریشی، ناٹی قریشی، چوہدری عاشق (کاکا)، محمد سلمان و دیگر موجود تھے آخر میں ملکی سلامتی و استحکام کی خصوصی دعا کرائی گئی۔