ٹرین حادثے میں بچھڑنے والے دولہا دلہن ہسپتال میں مل گئے

ٹرین حادثے میں بچھڑنے والے دولہا دلہن ہسپتال میں مل گئے
ٹرین حادثے میں بچھڑنے والے دولہا دلہن ہسپتال میں مل گئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں گزشتہ ہفتے ہونے والے خوفناک ٹرین حادثے میں شادی کے 48گھنٹے بعد بچھڑ جانے والے دولہا دلہن بالآخر ہسپتال میں مل گئے۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق 26سالہ دپیکا پالی اور 29سالہ محمد رفیق نامی دولہا دلہن حادثے کا شکار ہونے والی تین ٹرینوں میں سے ایک میں سوار تھے۔

شادی کے بعد محمد رفیق اپنی دلہن کو لیے اپنے گھر جا رہا تھا کہ راستے میں بدقسمت حادثہ پیش آ گیا، جس میں دونوں شدید زخمی ہو گئے اور انہیں مختلف ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا۔ گزشتہ روز حادثے کے لگ بھگ ایک ہفتے بعد دونوں کو ایک دوسرے کی خبر ملی اور محمد رفیق کو دوسرے ہسپتال لیجا کر اس کی دلہن سے ملوایا گیا۔

رپورٹ کے مطابق دپیکا کو سر، ہاتھ اور کلائی پر شدید چوٹیں آئی ہیں اور وہ تاحال ڈاکٹروں کی زیرنگرانی ہے۔ دوسری طرف محمد رفیق کی ایک ٹانگ فریکچر ہو گئی ہے۔ گزشتہ روز ہوش میں آنے کے بعد دپیکا نے اپنے شوہر کے بارے میں ڈاکٹروں سے پوچھا جس پر زخمیوں اور مرنے والوں کے ناموں والا رجسٹر کھنگالا گیا اور رفیق کو تلاش کرکے دونوں میاں بیوی کو ملوا دیا گیا۔

واضح رہے کہ اوڑیسا حکومت کی طرف سے اس ٹرین حادثے میں مرنے والے افراد کے لواحقین کے لیے 5لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ وزیراعظم نریندر مودی کی طرف سے بھی اضافی 2لاکھ روپے اور وزارت ریلوے کی طرف سے 10لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا گیا ہے۔یہ ٹرین حادثہ ریاست اوڑیسا کے ضلع بیلاسور میں ہوا جہاں تین ٹرینیں آپس میں ٹکرا گئی تھیں۔ اس خوفناک حادثے میں تین سو کے لگ بھگ لوگ لقمہ اجل بنے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -