وزیراعظم کی صدر سے ملاقات، بجٹ پر حمایت کی درخواست 

        وزیراعظم کی صدر سے ملاقات، بجٹ پر حمایت کی درخواست 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(این این آئی)صدر آصف علی زرداری سے وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے ایوانِ صدر میں ملاقات کی جس میں آئندہ بجٹ میں عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے حوالے سے  تجاویز پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ملاقات میں وفاقی وزیر ِمنصوبہ بندی و خصوصی اقدامات پروفیسر احسن اقبال بھی موجود  تھے۔وزیراعظم شہباز شریف نے بجٹ منظوری سے متعلق صدر مملکت آصف علی زرداری اور پاکستان پیپلز پارٹی سے مکمل حمایت طلب کر لی۔ملاقات میں ملک کی مجموعی معاشی اور مالی صورتحال  پر گفتگو کی گئی۔ملاقات میں آئندہ بجٹ میں عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے حوالے سے  تجاویز پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ صدر مملکت نے کہاکہ بجٹ میں غریب اور متوسط  طبقات کا خاص خیال رکھیں۔صدر مملکت اور وزیرِ اعظم نے آئندہ بجٹ میں ترقیاتی منصوبوں پر بات کی۔وزیراعظم نے صدر مملکت کو حالیہ دورہِ چین کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔صدر مملکت نے وزیرِ اعظم کو ملکی ترقی اور معاشی اہداف کے حصول میں تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ بعد ازاں پیپلز پارٹی کی قومی اسمبلی میں پارلیمانی پارٹی کا اہم اجلاس ہوا جس میں پیپلزپارٹی پارلیمانی پارٹی نے بجٹ پر اعتماد میں نہ لینے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے حمایت کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ نہیں کر سکی اورحکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کیا ہے‘آج بدھ کو ایک اور اجلاس بلالیا جس میں حتمی فیصلے کئے جائیں گے۔پارٹی ذرائع کے مطابق پی پی کے بجٹ پر اعتماد میں نہ لینے پر تحفظات برقرار ہیں اور پی پی نے بجٹ کے معاملے پر حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ منگل کو یہاں ہونے والے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں پی پی ارکان بجٹ پر اعتماد میں نہ لینے پر برہم ہو گئے۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت کے اہم اتحادی ہیں۔حکومت پی پی کو اہمیت نہیں دے رہی۔ حکومت کا ہر معاملے پر ساتھ دیا۔حکومت نے کسی بھی معاملے پر ہمیں اعتماد میں نہیں لیا۔ پی پی ارکان کا کہنا تھا کہ پی پی کا تنخواہوں میں پچیس فیصد تک اضافے کا مطالبہ ہے۔ ذرائع کے مطابق پی پی ارکان نے اداروں کی نجکاری کی بھرپور مخالفت کی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پی پی اجلاس بدھ کو دوبارہ ہوگا، پی پی اجلاس میں بجٹ حمایت یا مخالفت کا فیصلہ کرے گی۔

شہباز زرداری ملاقات

مزید :

صفحہ اول -