کباڑ گوداموں میں بارودی مواد، ذمہ دار کون؟8جانیں ضائع

    کباڑ گوداموں میں بارودی مواد، ذمہ دار کون؟8جانیں ضائع

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)ضلعی انتظامیہ کی غفلت لا پرواہی وعدم تو(بقیہ نمبر38صفحہ6پر)

جہی،ضلع کوٹ ادومیں ایک سال کے دوران کباڑ خانوں میں ہونے والے دھماکوں میں 8افراد جاں بحق 6سے زائد زخمی ہوچکے ہیں،پہلا دھماکہ گزشتہ سال یکم جون کے روزکوٹ ادو کینواحی علاقہ دائرہ دین پناہ میں چاہ نطفے والاکے قریب کباڑ کاکام کرنے والے محنت کش اقبال دیت کے گھرپرہواتھا، دھماکہ کے نتیجہ میں 6افرادجاں بحق اور2شدید زخمی ہوگئے تھے جبکہ دوسراکباڑ خانہ دھماکہ رواں سال 11فروری کے روزکوٹ ادو شہرلوئر کوٹ سلطان کنارینزد ڈوگر ملن میرج ہال کے قریب سیٹھ حیات کباڑیہ کے گودام پرہوا ہے،کباڑ کی دکان پر مزدور ٹرک میں کچرالوڈکررہے تھے کہ دھماکہ ہوگیا جس سے2 مزدورمحمد علی دایہ اور محمد شاہد جن کی عمریں 20 سے 22 سال بتائی گئی ہیں  زخمی ہو گئے تھے اب جبکہ تیسرا دھماکہ دڑہ روڈ سنانواں کباڑ کے گودام میں ہواجس میں بھی2 مزدور جانبحق ہوگئے ہیں،ضلع کوٹ ادو میں کباڑ کے گودام میں تیسرا بڑاحادثہ انتظامیہ کی لاپرواہی سے ہوا جس نے کئی جانیں نگل لیں جبکہ ایک سال کے دوران 8قیمتی جانوں کا ضیاع ہوچکا ہے،بارودی مواد یا کچھ اور آخر دھماکے کباڑ خانہ میں ہی کیوں ہوتے ہیں اس کیلئے انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کوئی توجہ نہ دی،جبکہ سول ڈیفینس پولیس انتظامیہ کی جانب سے اسکی روک تھام کیلئے کوئی اقدام نہیں کیا