ڈنگ ٹپاؤ پالیسیوں نے معیشت کا بیڑہ غرق کردیا'خواجہ حبیب الرحمان

ڈنگ ٹپاؤ پالیسیوں نے معیشت کا بیڑہ غرق کردیا'خواجہ حبیب الرحمان

اسلام آ باد(این این آ ئی)ایران پاک فیڈریشن آ ف کلچر اینڈ ٹریڈ کے صدر خواجہ حبیب الرحمان نے کہا ہے کہ ڈنگ ٹپاؤ پالیسیوں اوربیرونی قرضوں کی واپسی میں توازن کے فقدان نے معیشت کا بیڑہ غرق اور عام آدمی کی زندگی اجیرن بنا دی ہے، پانچ سالہ منصوبوں کے نام پر غیر حقیقی اعداد و شمار، ادائیگیوں میں توازن کا مسئلہ، بدانتظامی، سرکاری اور غیر سرکاری شعبوں میں بے قابو کرپشن کے باعث ملکی وغیر ملکی قرضوں کا حجم بڑھ کر12ہزار500ارب کا اضافہ ہو گیا ہے۔ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ ہماری معیشت کا یہ عالم ہے کہ ہمارے قومی بجٹ اب مکمل طور پر غیر ملکی قرضوں کے محتاج ہیں جبکہ ٹیکس دہندگان کی تعداد بڑھنے کی بجائے کم ہو رہی ہے ہے۔ہم خوشخالی کی عالمی دوڑ میں اس وقت تک شامل نہیں ہو سکتے جب تک ہم بنیادی مسائل کو حل کرنے کی کوشش نہیں کرتے۔ اراکین اسمبلی کے لئے مختص کئے جانے والے ترقیاتی فنڈز میں سے نصف آئندہ دس برسوں تک بیرونی و اندرونی قرضوں کی واپسی کیلئے وقف کر دئیے جائیں جبکہ آئی ایم ایف ، عالمی بنک اور دوسرے عطیات دہندگان سے قرضے لینا بھی یکسر رو کے جائیں ۔تارکین وطن کو بیرونی قرضوں کی واپسی کے کام میں شریک کرنے کے لئے پاک پراپرٹی اوورسیز بنک قائم کیا جائے۔ خواجہ حبیب الرحمان نے کہا کہ ہمیں خوفناک اقتصادی بحران سے گلو خلاصی کرانے کے لئے خود ا?ٹھنا ہو گا اور اقتصادی آتش فشاں کو پھٹنے سے روکنے کیلئے حکومت کوازسر نو پالیسی مرتب کر نا ہو گی۔

مزید : کامرس