مزدور کی کم سے کم اجرت 15 ہزار روپے پر عملدرآمد نہیں ہو سکا

مزدور کی کم سے کم اجرت 15 ہزار روپے پر عملدرآمد نہیں ہو سکا

اسلام آباد(اے پی پی) قومی اسمبلی کو سمندر پار پاکستانیوں اور ترقی انسانی وسائل کی وزارت کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ مزدور کی کم سے کم اجرت 15 ہزار روپے پر عملدرآمد نہیں ہو سکا‘ محنت کش افراد کی فلاح و بہبود اور چائلڈ لیبر کے سدباب کے حوالے سے مزید قانون سازی کی جائے گی۔ جمعہ کو قومی اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران شاہدہ رحمانی کے سوال کے جواب میں سمندر پار پاکستانیوں اور انسانی وسائل کی وزارت کی طرف سے قومی اسمبلی کو بتایا گیا کہ محنت اور چائلڈ لیبر کا شعبہ 18ویں ترمیم کے بعد صوبوں کو منتقل ہوگیا ہے۔ وفاقی دارالحکومت میں صرف اس شعبہ کی نگرانی آئی سی ٹی اور کمشنر اسلام آباد کرتے ہیں۔ پارلیمانی سیکرٹری راجہ جاوید اخلاص نے کہا کہ صوبوں کو اس شعبہ کی منتقلی کے بعد صوبوں نے اس حوالے سے خاطر خواہ پیش رفت نہیں دکھائی اور ہمیں صوبوں کی طرف سے کوئی تسلی بخش جواب بھی نہیں آیا۔ چائلڈ لیبر کے حوالے سے ہم نے وزارت داخلہ سے تفصیلات طلب کی ہیں ۔

مزید : کامرس