ڈی جی آئی اے ای اے تین روزہ سرکاری دورہ پر آج پاکستان پہنچیں گے

ڈی جی آئی اے ای اے تین روزہ سرکاری دورہ پر آج پاکستان پہنچیں گے

اسلام آباد (این این آئی)جوہری توانائی کے بین الاقوامی ادارے (آئی اے ای اے ) کے ڈائریکٹر جنرل یوکیا امانو پاکستان کے تین روزہ سرکاری دورے پر (آج) پیر کو پاکستان پہنچیں گے۔ اپنے قیام کے دوران وہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کے علاوہ پاکستان اٹامک انرجی کمیشن (پی اے ای سی) کے اسلام آباد، فیصل آباد اور کراچی کے مختلف مراکز کے دورے کریں گے۔ جوہری توانائی کے بین الاقوامی ادارے (آئی اے ای اے) کے بانی رکن کی حیثیت سے پاکستان نے جوہری توانائی، جوہری تکنیکوں کی صنعتی عملداری، نان ڈسٹرکٹو ٹیسٹنگ، خوراک و زراعت، زمین کی بہتری، ریڈی ایشن انڈیوسڈ میوٹیشن، ریڈی ایشن آنکالوجی اور نیوکلیئر میڈیسنز، ماحولیاتی تحفظ اور آئسو ٹاپ ہائیڈرولاجی وغیرہ کے شعبوں میں آئی اے ای اے کے ساتھ بھرپور تعاون کیا ہے۔ اقوام متحدہ کے زیر انتظام ’’جوہری واچ ڈاک‘‘ کے بین الاقوامی ادارے کی حیثیت سے پہچانے جانے والے ادارے آئی اے ای اے جوہری میدان میں تعاون کا بین الاقوامی مرکز ہے۔ یہ ادارہ جوہری ٹیکنالوجی کے پر امن استعمال کو فروغ دینے کیلئے اپنے رکن ممالک اور عالمگیر سطح پر کثیر الجہت شراکت داروں کے ساتھ کام کر رہا ہے۔ یوکیا امانو کا تعلق جاپان سے ہے اور وہ دسمبر 2009ء سے آئی اے ای اے کی سربراہی ملنے سے پہلے اعلیٰ سطحی پالیسی ساز عہدوں پر بشمول آئی اے ای اے کے بورڈ آف گورنرز کے چیئرمین (2005-2006) تعینات رہ چکے ہیں۔ وہ تخفیف اسلحہ اور جوہری عدم پھیلاؤ کی ڈپلومیسی کے علاوہ جوہری توانائی کے امور پر بے پناہ تجربہ رکھتے ہیں۔ جوہری توانائی کے بین الاقوامی ادارے کے سربراہ کے سرکاری دورہ پاکستان کے لئے اہم قومی مفاد کے ساتھ آئی اے ای اے اور پاکستان کے مابین تعاون کی نئی راہیں کھلیں گی۔

مزید : صفحہ آخر