سندھ کی فلاح کیلئے کام کرنے والی جماعتوں سے تعاون کریں گے :مصفطیٰ کمال

سندھ کی فلاح کیلئے کام کرنے والی جماعتوں سے تعاون کریں گے :مصفطیٰ کمال

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) فنکشنل لیگ کے رہنما صدرالدین شاہ راشدی سربراہی میں نمائندہ وفد کی پی ایس پی مرکزی سیکریٹریٹ پاکستان ہاؤس میں پی ایس پی کے چیئرمین سید مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی سے ملاقات کی،ملاقات میں ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال پرتفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ملاقات میں پی ایس پی کے سیکرٹری جنرل رضا ہارون، سینیئر وائس چیئرمین انیس ایڈوکیٹ، وائس چیئرمین اشفاق منگی، موہن منجیانی، آسیہ اسحاق، حفیظ الدین اور دیگر بھی موجود تھے۔فنکشنل لیگ کے وفدمیں سردار رحیم، رکن سندھ اسمبلی نند کمار اور دیگر بھی شریک تھے۔ ملاقات کے میڈیاکے نمائندوں سے گفتگو کر تے ہوئے چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہاکہ ہماری کسی سے زیادتی اختلاف نہیں جو جماعت بھی سندھ اورپاکستان کی فلاح و بہود کے لئے کام کرے گی پاک سر زمین پارٹی ان کے ساتھ کھڑی ہوگی کیونکہ جو بات ہم پہلے دن سے جو باتط کہتے آئے ہیں اج بھی اس پر قائم ہیں ہم ضمیر فرروش نہیں اصولوں پر قائم ہیں، سندھ کے شہری اور دیہی علاقوں کی تباہی کی زمہ دار پی پی ہے بدقسمتی سے سندھ کے شہری علاقوں کو اپنوں نے ہی لوٹا ھے جس کو چوکیدار بنایا اسی نے چورکی پاک سرزمین پارٹی نیفائدہ اور نقصان کی بنیاد پر فنگشنل لیگ کو ووٹ کاسٹ نہیں کیا ھم صحیح اور غلط پر فیصلہ کرنے والے لوگ ہیں، انہوں نے کہاکہ پیپلز پارٹی نے دس سال میں سندھ کا جو حال کیا ہے اس بدترین کارکردگی پرپیپلز پارٹی کو سپورٹ کرنے کا کوئی جواز نہیں بنتا، آج سندھ میں ستر لاکھ بچے اسکولوں سے باہر ہے،جو بچے اسکول میں تعلیم حاصل کررہے ہیں انکی تعلیم کا معیار انتہائی پست ھے عوام پینے کے صاف پانی سے محروم،ھے اسپتالوں کے حالت زار ھے،اوراپنے اپنے مفادات کے خاطر کراچی کو کچرا کنڈی میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہمارری خوش قسمتی ہے یونس سائیں ھمارے آفس آئے اورانہوں نے سینیٹ الیکشن میں سپورٹ کرنے پر ہمارا شکریہ ادا کیا، انہوں نے کہا کہ فنگشنل لیگ کے امیدوار کو جیت پر مبارکباد پیش کرتے ہیں,فنگشنل لیگصدر الدین شاہ راشدی نے کہاکہ پی ایس پی ووٹ کی وجہ سے مظفر شاہ کامیاب ہوئے، ھم پی ایس پی کا شکریہ ادا کرتا ہیں۔انہوں نے کہاکہ ھم کسی قوت کے سامنے جھکنے والے نہیں ہیں اور2018 کا انتخابات شہری اور دہی علاقوں کی تفریق ختم کردیں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر