یوتھ الیکشن کے ذریعے نوجوانوں کو نئی قیادت فراہم کریں گے :حافظ نعیم الرحمان

یوتھ الیکشن کے ذریعے نوجوانوں کو نئی قیادت فراہم کریں گے :حافظ نعیم الرحمان

کراچی (اسٹاف رپورٹر )امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ حکمرانوں نے ہمیں ذاتوں ، برادریوں اور قوموں میں تقسیم کیا اور خود قومی خزانہ لوٹنے میں مصروف ہیں ،گزشتہ 30سالوں سے پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم کی اتحادی حکومت نے شہریوں کو نفرتوں کے سوا کچھ نہیں دیا، شہر میں اس وقت ایم کیو ایم کی حکومت ہے لیکن انہوں نے شہر کا ایک مسئلہ بھی حل نہیں کیا، ایم کیو ایم نے سینٹ الیکشن میں کراچی کے ووٹ کو وڈیروں اور جاگیرداروں کو فروخت کردیا ، کراچی کا ہر شہری پوچھنے میں حق بجانب ہے کہ ہمارا ووٹ کتنے میں فروخت کیا، جماعت اسلامی نے شہریوں کے مسائل کے حل کے لیے جدوجہد کی۔کے الیکٹرک اور نادرا کے خلاف تحریک چلائی ہے اور اب پانی کی فراہمی کے لیے بھی تحریک کا آغاز کریں گے۔ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے شناختی کارڈ کے مسائل حل ہونے پر اہلیان اورنگی سیکٹر12ایل ،مین روڈ بروہی ہوٹل پر امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کے اعزاز میں دیے گئے ’’استقبالیہ تقریب ‘‘سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب سے امیر جماعت اسلامی ضلع غربی عبدالرزاق، نائب امیر ضلع غربی فضل احد حنیف ،امیر زون مدثر حسین انصاری ، صدر پبلک ایڈ عطائے ربی، امام مسجد مولانا محمد علی حسین، امام مسجد مولانا محمد ابراہیم ، سماجی کارکن شیر محمد بروہی ، محمود جمال ، محمد ایوب ، صدر محلہ کمیٹی فاروق نے خطاب کیا۔تقریب میں جرمن اسکول قبضہ، پانی کے مسائل، سڑکوں کی تعمیر ، کچرا کنڈی، اوور بلنگ جیسے مسائل حل کرنے کی قرارداد بھی پیش کی گئی۔حافظ نعیم الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ جماعت اسلا می کراچی کی روشنیوں کو لوٹانے کے لیے عوام کو یکجہتی اور اتحاد کی دعوت دیتی ہے۔ہم نے جرمن اسکول کو قبضہ مافیا سے آزاد کروانے کے لیے سپریم کورٹ میں کیس دائر کررکھا ہے۔ جرمن اسکول پر قبضہ کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا ، تعلیم ہر شہری کا بنیادی حق ہے اور جماعت اسلامی شہریوں کو ان کا حق ضرور دلوائے گی۔انہوں نے کہا کہ ٹینکر مافیا اور واٹر بورڈ کے خلاف ایک بڑی تحریک چلائیں گے اورکراچی میں پانی کی غیر منصفانہ تقسیم کے خلاف اورنگی ٹاؤن سے مہم کا آغاز کریں گے۔یوتھ الیکشن کے ذریعے کراچی کو یو سی کی سطح پر متبادل قیادت فراہم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ہی حقیقی قیادت ہے جو شہر کی کھوئی ہوئی شناخت کو واپس لاسکتی ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ہمیں تعصب ، لسانیت کے بجائے دین کی بنیاد پرمتحد ہونا ہوگا اور اللہ کی زمین پر اللہ کا نظام نافذ کرنا ہوگا۔عبدالرزاق نے کہا کہ جماعت اسلامی عوام کے درمیان رہتی ہے جبکہ دیگر سیاسی جماعتیں الیکشن سے قبل آبادی کا رخ کرتے ہیں۔جن کو عوام کی مشکلات و پریشانی سے کوئی سروکار نہیں۔ مدثر حسین انصاری نے کہاکہ جماعت اسلامی مظلوموں اور محروموں کے ساتھ کھڑی ہے۔انہوں نے سیکریٹری صحت، حکومت سندھ سے مطالبہ کیا کہ سندھ گورنمنٹ ہیلتھ سینٹر اورنگی 15مقامی آبادی کے لیے کسی نعمت سے کم نہیں ، گائنی، ڈینٹل ، ایکسرے مشینری و ڈاکٹرز موجود ہونے کے باوجود آپریشنل نہیں ، متعلقہ حکام فوری نوٹس لیں۔ عطائے ربی نے قرارداد پیش کی کہ اورنگی میں نادرا میگا سینٹر ، موبائل سروسز سمیت عملے میں اضافہ کیا جائے ، نادرا اپنی تجدید شدہ ایس او پی پر عمل درآمد یقینی بنائے۔ نادرا اسٹاف اپنا رویہ مزید بہتر بنائے تاحال لوگوں کی جانب سے شکایات موصول ہورہی ہے۔ اورنگی کے 30لاکھ آبادی کے لیے یونیورسٹی قائم کی جائے۔ میدان اور پارک سے قبضہ مافیا سے ختم کروایا جائے۔ بنارس پل تا ٹاؤن آفس سڑک کی فوری مرمت کروائی جائے۔گرمی کی شدت میں اضافہ ہوتے ہی لوڈشیڈنگ میں اضافہ ہوا ہے، قابو پایا جائے۔ کے الیکٹرک کی اووربلنگ کے شکار جماعت اسلامی کے آفس تشریف لائیں۔ہم ان کے مسائل کے حل کے لیے جدوجہد کریں گے۔#

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...