’’ نوازشریف کو ایک یا دو جوتے نہیں مارے گئے بلکہ ۔ ۔ ۔‘‘ تقریب میں موجود سینئر صحافی وڑائچ کا ایسا انکشاف کہ پوری مسلم لیگ ن حیران پریشان رہ جائے گی

’’ نوازشریف کو ایک یا دو جوتے نہیں مارے گئے بلکہ ۔ ۔ ۔‘‘ تقریب میں موجود ...

لاہور (ویب ڈیسک)لاہور میں دینی درسگاہ جامعہ نعیمیہ میں اتوار کو سابق وزیر اعظم نواز شریف پر ایک نہیں کئی جوتے پھینکے گئے اور جوتے پھینکے والے طلباءلبیک لبیک کے نعرے لگاتے رہے۔

بی بی سی کے مطابق جامعہ نعیمیہ میں ہونے والی اس تقریب میں شریک سنیئر صحافی سہیل وڑائچ نے بتایا کہ وہ اس واقع کے چشم دید گواہ ہیں اور انھیں لگا کہ یہ ایک منظم واقعہ تھا، جب نواز شریف کو تقریر کے لیے سٹیج پر مدعو کیا گیا تو اس وقت نواز لیگ کے چند کارکنوں نے نواز شریف کے حق میں نعرے لگانے شروع کر دیے لیکن  نواز شریف جیسے ہی تقریر کے لیے مائک کے سامنے کھڑے ہوئے اچاناک ایک طرف سے ایک جوتا پھینکا گیا جو نواز شریف کے کاندھے پر لگا اور اس کے ساتھ ہی دوسری طرف سے بھی ایک جوتا سٹیج کی طرف پھینکا گیا۔ اس کے بعد کئی اطراف سے یہ کوشش کی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ جوتا پھینکے والے طلبا کو جب پکڑا گیا تو انھوں نے لبیک لبیک کے نعرے لگانا شروع کر دیے اور ہال میں موجود دیگر طلبا بھی اس نعرے بازی میں شریک ہو گئے۔

سہیل وڑائچ کے بقول یہ کیفیت کافی دیر تک جاری رہی جس کے بعد مفتی راغب نعیمی کو خود سٹیج پر آ کر بڑی سختی سے طلبا کو آرام سے بیٹھنے کے لیے کہا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...