لاہورہائیکورٹ، علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی استدعا مسترد،سابق وزیر کو ہراساں کرنے سے روک دیا

لاہورہائیکورٹ، علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی ...
لاہورہائیکورٹ، علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی استدعا مسترد،سابق وزیر کو ہراساں کرنے سے روک دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہور ہائیکورٹ نے علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی استدعا مسترد کرتے ہوئے انہیں ہراساں کرنے اور تضحیک سے روک دیااور رہنماپی ٹی آئی کو ہدایت کی ہے کہ نیب حکام سے تعاون کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی درخواست کی سماعت ہوئی،جسٹس علی باقرنجفی کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے درخواست پرسماعت کی۔

نیب کی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ علیم خان ابھی تک ایک مرتبہ بھی انکوائری میں پیش نہیں ہوئے۔وکیل علیم خان کا کہناتھا کہ نیب وژن ڈویلپرزکیخلاف 3 مرتبہ انکوائری کرکے بندکرچکا ہے،قانون کے مطابق 3مرتبہ بندکردہ انکوائری دوبارہ نہیں کھولی جا سکتی،نیب نے میرے موکل کیخلاف چوتھی مرتبہ انکوائری کھولی،ہائیکورٹ نے بند انکوائری کھولنے کیخلاف حکم امتناعی بھی دیدیا۔

وکیل علیم خان نے کہا کہ ہائیکورٹ نے علیم خان کی طلبی کے نوٹسزمعطل کررکھے ہیں،عدالت سے استدعا ہے کہ علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی درخواست مسترد کی جائے۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد علیم خان کی طلبی کیخلاف حکم امتناعی خارج کرنے کی نیب کی استدعا مستردکردی اور عبدالعلیم خان کو نیب حکام سے تعاون کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے نیب کوعلیم خان کوہراساں کرنے اورتضحیک سے روک دیا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور