سیاستدانوں کوآپس میں سرجوڑنانہیں سرپھوڑناپسند ہے،ناصراقبال خان

سیاستدانوں کوآپس میں سرجوڑنانہیں سرپھوڑناپسند ہے،ناصراقبال خان

 ( پ ر ) ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان ،سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ، سینئر نائب صدرفاروق چوہان، صدرمدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدرکراچی یونس میمن ،صدرپنجاب محمدیونس ملک، صدرشیخوپورہ عمران حیدر،صدراوکاڑہ سیّداعجازگیلانی ،صدرلاہورایوب چودھری اورنائب صدرلاہورمہران اجمل خان نے کہا ہے کہ ہمارے زیادہ ترسیاستدان آپس میں سرجوڑنانہیں ایک دوسرے کاسرپھوڑناپسندکرتے ہیں۔ہماری سیاسی قیادت کبھی کسی ایک بات پرمتفق نہیں ہوسکتی،یہ خودایک دوسرے کی دشمنی میںآمروں کودعوت دیتے اوربعدمیں انہیں کوستے ہیں۔کسی سیاسی جماعت کی ترجیحات میں عوام کے بنیادی حقوق اوران کی انسانی ضروریات کواہمیت نہیں دی جاتی ۔اس وقت عوام کو پینے کے صاف پانی ،صحت کی جدیدسہولیات،فوری انصاف،روزگار اورتعلیم کی فراہمی پرفوکس کیا جائے۔ہمارے ہاںشاہراہوں کی تعمیر پرپیسہ پانی کی طرح بہایاجارہا ہے جبکہ عام لوگ بھوک اوربیماریوں کے سبب مررہے ہیں،دواﺅںکی طرح ہماری اجتماعی بداعمالیوں کے سبب دعاﺅںمیں بھی اثرنہیں رہا۔وہ ایک اجلا س سے خطاب کررہے تھے۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ انتخابات کے دنوں میں گلیوں میں مارے مارے پھرنے اورووٹرزکی منت سماجت کرنیوالے نمائندوں نے کامیابی کے بعد عوام کوتنہاچھوڑدیا۔نام نہادترقیاتی منصوبوں کی تعمیر اورتکمیل کے دوران کسی مرحلے پر مقامی افراد سے ان کی رائے تک نہیں لی جاتی اورنہ ان کے تحفظات سنے جاتے ہیں ،اگریہ جمہوریت ہے توپھرآمریت کی شکل وصورت کیا ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ خداراسیاسی قیادت ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے کی بجائے خلوص نیت کے ساتھ ملک وقوم کیلئے ترجیحات متعین اورمتحدہوکراندرونی وبیرونی خطرات کامقابلہ کرے ۔ اگرسیاستدانوں اورمنتخب نمائندوںکے رویوں میں تبدیلی نہ آئی توعوام نام نہاد جمہوریت اورموروثی سیاست سے پوری طرح متنفرہوجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ قومی وسائل میں سے عوام کوان کاحصہ بھیک کی طرح نہ دیا جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1