آئین کے تحت حکومت کا خاتمہ واجب ہو چکا جلد فائنل کال دوں گا طاہرالقادری

آئین کے تحت حکومت کا خاتمہ واجب ہو چکا جلد فائنل کال دوں گا ...

           لاہور (جنرل رپورٹر+ سٹاف رپورٹر )عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ آئین کے آرٹیکل213 اور 218 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بنی، آئین پاکستان کی رو سے موجودہ حکومت اور نظام کا خاتمہ واجب ہو چکا، ملک کا انتظامی ڈھانچہ مکمل طور پر تبدیل کرنا ہوگا۔ عوام کا ریلہ سب کو بہا کر لے جائے گا۔ وہ گزشتہ روز ملک کے مختلف شہروں میں ویڈیو لنک کے ذریعے کارکنوں سے خطاب کررہے تھے ۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے مزید کہا کہ ہم عوام کو سیاسی آمریت سے نجات دلانا چاہتے ہیں۔ اگر یہ لوگ مزید حکمرانی میں رہے تو عوام مزید خود کشیاں کرینگے۔ آئین پاکستان کی رو سے اس حکومت اور نظام کا خاتمہ واجب ہو چکا ہے۔ ظلم کی کالی رات جلد ختم ہونے والی ہے۔ عوام نے فیصلہ دے دیا ہے کہ وہ انقلاب کیلئے تیار ہیں۔ میں تمام سیاسی جماعتوں کو تحریک میں شامل ہونے کی دعوت دیتا ہوں۔ جلد ہی فائنل کال دوں گا ۔ ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا تھا کہ گزشتہ 65 سالوں میں اس ڈھونگی نظام سے عوام کو کیا ملا ؟۔ مظلوم طبقہ آج بھی ظلم کی چکی میں پس رہا ہے۔ عوام کا معیار زندگی کہاں گیا جس کی آئین پاکستان بات کرتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں جمہوریت نام کی کوئی چیز نہیں ہے۔ اس نظام کو جمہوریت نہیں کہتے جہاں غربت ہو، جمہوریت میں تمام طبقات کو برابری کے حقوق دیئے جاتے ہیں اور کرپٹ عناصر کا خاتمہ کیا جاتا ہے۔ ہم ملک میں حقیقی جمہوریت چاہتے ہیں۔ ملک کو سیاسی آمریت سے نجات دلا کر رہیں گے۔ پاکستان کی ازسر نو تعمیر کا وقت قریب آگیا ہے۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ دھاندلی کے تحت قائم ہونے والی پارلیمنٹ سے خیر کی کوئی توقع نہیں ہے۔ 75 فیصد پارلیمنٹ قرضہ خوروں، ٹیکس چوروں اور کرپٹ لوگوں سے بھری پڑی ہے۔اقتدار ظالم حکمرانوں سے لیکر عوام کو منتقل کرنے کا وقت آ گیاہے۔ملک میں کسی پارلیمنٹ کاوجود نہیں انہوں نے کہا کہ عوام استحصالی نظام کا خاتمہ کر دیں گے،ہماری تحریک کا مقصد بوسیدہ نظام کی دیوار کو گرانا ہے۔ انہوں نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ لو گ گھروں میں نہ بیٹھیں استحصالی نظام کیخلاف باہر نکلیں۔

مزید : صفحہ اول