پنچایت نے ملزم کی نابالغ بیٹی مغویہ کے بھائی کو ونی کردی

پنچایت نے ملزم کی نابالغ بیٹی مغویہ کے بھائی کو ونی کردی
پنچایت نے ملزم کی نابالغ بیٹی مغویہ کے بھائی کو ونی کردی

  


فیصل آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) نشاط آباد کے علاقہ میں 14 سالہ لڑکی کو 8 ماہ قبل اغواءکرنے کے واقعہ پر پنچایت نے ملزم کی نابالغ لڑکی مغویہ کے بھائی کے ساتھ ”ونی“ کردی۔ متاثرہ خاندان نے اس متعدد بار پولیس حکام کو انصاف فراہمی کیلئے درخواستیں دیں مگر کارروائی نہ ہونے پر احتجاج کرتے ہوئے ٹائر جلا کر روڈ بلاک کرکے ٹریفک آمدورفت معطل کردی اور پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی جبکہ پولیس نے لڑکی اغواءکرنے کے واقعہ میں ملوث ماں بیٹی کو گرفتار کرلیا۔ ذرائع کے مطابق چک نمبر سات ج ب پنجوڑ کے رہائشی اسلم کی چودہ سالہ بیٹی سویرا جو کہ ایلیمنٹری ہائی سکول سرگودھا روڈ میں چھٹی جماعت کی طالبہ تھی۔ اس دوران اس کی کلاس فیلوں عروج کے والد رشید احمد نے مبینہ طور پر اپنی بیٹی و بہن سمیت پانچ افراد کی مدد سے اغواءکرکے اس سے شادی رچالی۔ جس پر مغویہ کے والد اسلم نے اپنی بیٹی سویرا کی واپسی کا مطالبہ کیا اور معاملہ علاقہ کی پنچایت میں پہنچ گیا تو معززین پنچایت نے محمد اسلم کی بیٹی سویرا کے اغواءکے بدلہ میں ملزم رشید کی نابالغ بیٹی عروج بی بی کو مغویہ سویرا اسلم کے بھائی شیراز اسلم کے ساتھ ونی کرنے کا فیصلہ سنادیا اور فریقین کے درمیان تحریری معاہدہ کروالیا گیا۔ ذرائع کے مطابق کہ مغویہ سویرا کے والد اسلم کے لواحقین نے لڑکی کے اغواءاور ونی کرنے کے فیصلے کے بارے میں پولیس کو متعدد درخواستیں دیں مگر ان پر عملدرآمد نہ ہونے پر گزشتہ روز متاثرہ خاندان نے واقعہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ملت روڈ بلاک کردی۔ جس پر پولیس نے حرکت میں آتےہوئے ملزم رشید کی نابالغ بیٹی عروج اور اس کی والدہ کو حراست میں لے لیا اور سرپنچوں عاشق حسین، محمد اسلم اور قاری خالق کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارنے شروع کردئیے ہیں اور سی پی او فیصل آباد نے پولیس کو فوری طور پر ملزموں کے خلاف مقدمہ درج و گرفتار اور مغویہ سویرا اسلم کی بازیابی کیلئے ٹھوس اقدامات کرنے کا حکم دیا ہے۔

مزید : فیصل آباد