قومی اسمبلی ، ایس آئی سی پی کا بل منظور ، اپوزیشن کا تیسرے روز بھی واک آؤٹ

قومی اسمبلی ، ایس آئی سی پی کا بل منظور ، اپوزیشن کا تیسرے روز بھی واک آؤٹ

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیر اعظم نواز شریف کی عدم شرکت پر متحدہ اپوزیشن نے مسلسل تیسرے روز بھی واک آؤٹ کیا ۔تحریک انصاف کے پارلیمانی لیڈر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیر اعظم نواز شریف کے ایوان میں آنے تک اپوزیشن اجلاس کا بائیکاٹ کر تی رہے گی،خزانہ کی کمیٹی میں بھی اپوزیشن کے مطالبے کے باوجود پانامہ لیکس پر بات نہیں کی گئی بلکہ کمیٹی میں آئی ایم ایف کی ہدایت پر ایس آئی سی پی کا بل جلد بازی میں منظور کروایا گیا جس پر اپوزیشن نے احتجاجاً کمیٹی سے بھی واک آؤٹ کیا۔جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر صاحبزادہ طارق اللہ نے نکتہ اعتراض پر بات کرتے ہوئے کہا کہ بنگلہ دیش میں پاکستانیوں کا ساتھ دینے والے چھٹے شخص کو پھانسی دیدی گئی ، بنگلہ دیش کے جماعت اسلامی کے امیرمطیع الر حمٰن نظامی کو پھانسی دی گئی ہے، انہوں نے کہا کہ 1971ء میں پاکستان سے محبت کرنے والوں کو سزائیں دی جا رہی ہیں، اب بھی ہزاروں لوگ بنگلہ دیشی حکومت کی قید میں ہیں، وزارت خارجہ بنگلہ دیش کے سفیر کو طلب کر کے احتجاج کرے۔ رکن قومی اسمبلی شائستہ پرویز نے کہا کہ پاکستان بنگلہ دیش اور بھارت کے درمیان معاہدہ طے پایا تھا کہ سابقہ ادوار پر کوئی بات نہیں ہو گی، مطیع الرحمان کی پھانسی قابل مذمت ہے،جو1974 میں ہونے والے سہ ملکی معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔اس موقع پر تحریک انصاف کے پارلیمانی لیڈر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اپوزیشن پر ایس آئی سی پی کا بل بلڈوز کر دیا گیا، جس پر اپوزیشن نے کمیٹی سے واک آؤٹ کیا، اگر اپوزیشن کا موقف نہیں سنا جاتا تو پھر ہمیں کمیٹیوں میں جانے کی کیا ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف کی ایوان میں عدم موجودگی پر ہمارا آج بھی وہی موقف ہے ہم وزیراعظم کے آنے تک اجلاس کا بائیکاٹ کرتے رہیں گے۔ اس موقع پر مسلم لیگ(ن) کے میاں عبدالمنان نے کہا کہ خزانہ کمیٹی کے اجلاس میں کوئی واک آؤٹ نہیں ہوا تھا، پی ٹی آئی والے اپنی مصروفیت کے باعث کمیٹی سے چلے گئے۔ اس موقع پر موجود خان اچکزئی نے کہا کہ پارلیمنٹ کا وفد ایک دن کا دورہ کرے اور پھانسیوں کے معاملے کے حوالے سے بات چیت کرے،ابھی بھی دو ہزار سے زائد لوگ وہاں قید ہیں، اگر اس چیز کا نوٹس نہ لیا گیا تو حالات مزید خراب ہوجائیں گے۔ سپیکر ایاز صادق نے کہا کہ ارکان کے وفد کی دفتر خارجہ کے ساتھ میٹنگ طے کرتے ہیں جس میں اس مسئلے کو حل کرنے کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی


loading...