افغانستان میں ڈرون حملہ ،کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے5دہشتگرد ہلاک

 افغانستان میں ڈرون حملہ ،کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے5دہشتگرد ہلاک

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں )پاک افغان سرحد پر افغانستان کی حدود میں ہونےوالے ڈرون حملے میں کالعدم تنظیم ٹی ٹی پی کے5 افراد مارے گئے، جبکہ صو بے قندوز میں سکیورٹی فورسز کے سرچ آپریشن کے دوران 10 طالبان ہلاک اور 10 قیدیوں کو بازیاب کرالیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق ڈرون حملہ رات کی تاریکی میں شمالی وزیرستان سے ملحقہ افغانستان کے صوبہ پکتیکا کے علاقہ لمن میں کیا گیا جہاں حملے میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے حافظ گل بہادر گروپ کو نشانہ بنایا گیا اور ڈرون سے کئی میزائل داغے گئے جس کے نتیجے میں کمانڈر اسد اللہ عرف سنگری سمیت 5 دہشت گرد ہلاک ہوگئے ۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان کے صوبے قندوز کے ضلع چہار ڈارا میں افغان سکیورٹی فورسز نے سرچ آپریشن کے دوران طالبان کے قبضے سے 10 قیدیوں کو بازیاب کرالیا، سرچ آپریشن کے دوران گھمسان کی جھڑ پ میں 10 طالبان مارے گئے اور 15 زخمی ہوئے۔دوسری جانب سابق صحافی، مقامی ٹی وی چینلز کی میزبان اور ایوان زیریں کی مشیر برا ئے کلچر مینا مینگل کو نامعلوم مسلح افراد نے فائر نگ کر کے قتل کردیا۔ ملزمان کی تلاش میں چھاپے مارے جارہے ہیں۔ 2018 افغانستان میں صحافیوں کےلئے سب سے برا سال ثابت ہوا تھا اور رواں برس کی ابتدا بھی اچھی نہیں ہوئی ہے۔واضح رہے گزشتہ برس دسمبر میں افغانستان میں امریکی ڈرون حملے میں طا لبا ن کے اہم کمانڈر ملا عبدا لمنا ن کے مارے جانے کی اطلاعات سامنے آئی تھیں۔اس بارے میں برطانوی نشریاتی ادارے نے اپنی رپورٹ میں بتایا تھا ملا عبدالمنان اخو ند افغانستان کے جنوبی صوبے ہلمند میں طالبان کے گورنر اور فوجی سربراہ تھے۔گزشتہ برس اس ڈرون حملوں میں ملا عبدالمنان کی ہلاکت کو طا لبان نے ایک بڑا نقصان قرار دیا تھا اور کہا تھا ایسی کوششیں انہیں افغانستان پر دوبارہ کنٹرول حاصل کرنے سے نہیں روک سکتی۔ڈرون حملو ں کی بات کی جائے تو امریکہ کی جانب سے افغانستان میں جاری طویل جنگ میں متعدد حملوں میں کئی عسکریت پسندوں کی ہلاکت کی اطلا عا ت سامنے آچکی ہیں۔اگرچہ گزشتہ کئی عرصوں سے ان ڈرون حملوں کی تعداد میں کمی دیکھنے میں آئی تاہم امریکہ کی جانب سے افغان جنگ کے خاتمے کی کوششوں کے باوجود یہ مکمل طور پر بند نہیں ہوسکے۔یہاں یہ بات بھی واضح رہے کہ امریکہ 17 سالہ طویل افغان جنگ کے خا تمے کےلئے طالبان سے مذاکرات کر رہا ہے اور اس کے کئی دور ہوچکے ہیں، جس میں مثبت پیش رفت ہونے کا دعویٰ سامنے آتا رہا ہے ۔

افغانستان ڈرون حملہ

مزید : صفحہ اول