سرکاری ہسپتالوں میں جزا سزا کا نظام لائینگے ،ترقیاتی منصوبوں میں پرائیویٹ سیکٹر کو شامل کیا جائے ،ون ونڈو آپریشن کے تحت سرمایہ کاروں کو سہولتیں فراہم دواﺅں کی قیمتیں عام آدمی کی پہنچ تک رکھی جائیں ،وزیراعظم

  سرکاری ہسپتالوں میں جزا سزا کا نظام لائینگے ،ترقیاتی منصوبوں میں پرائیویٹ ...

لاہور ،اسلام آباد(جنرل رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں ) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ انشاءاللہ پاکستان کو رےاست مدےنہ بنائےں گے ‘ہم سر کاری ہسپتالوں کو پرائےوٹ نہےں کر نا چاہتے لےکن انکی مےنجمنٹ اےسی کر نا چاہتے ہےں جہاں سرکاری ہسپتالوں مےں پرائےوٹ ہسپتالوں جےسی اعلی مےعار کی سہولتےں فراہم ملےں ،ہر سرکاری ہسپتال میں شوکت خانم ہسپتال کا کلچر لائیں گے،سرکاری ہسپتالوں کو نجی ہسپتالوں کے معیار کے برابر لایا جائے گا ۔وزیراعظم عمران خان نے شوکت خانم ہسپتال کی فنڈ ریزنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شوکت خانم کینسر ہسپتال میں 80 فیصد مریضوں کا مفت علاج ہوتا ہے، یہاں ہر مریض ڈاکٹر کیلئے وی آئی پی ہوتاہے۔ پاکستان کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں یہی کلچر لےکر آئینگے،سرکاری ہسپتالوں کو نجی ہسپتالوں کے معیار کے برابر لایا جائےگا۔وزیر اعظم نے واضح کیا کہ سرکاری ہسپتالوں کی بہتری میں کسی رکاوٹ کوبرداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری ہسپتالوں کا سسٹم تبدیل کرنے سے حالات بہترہوں گے،سرکاری ہسپتالوں میں بہتری اس وقت تک نہیں آئے گی جب تک سزا اور جزاکانظام نہیں لایا جاتا، اچھے ڈاکٹرزکو بہترین تنخواہیں دیں گے۔ ہم نے شوکت خانم ہسپتال کے معاملے مےں بہت سے مشکلات کا سامنا کےا اور آج بھی کر رہے ہےں لےکن اسکے باوجود پشاور شوکت خانم بھی اعلی معےار کی صحت کی سہولتوں کی فراہم کی جا رہی ہے اور جو سہولتےں پشاورکے شوکت خانم کے ہسپتال مےں ہےں اےسی افغانستان تک کسی اور ہسپتال مےں نہےں وہاں بھی70سے80فےصد مر ےضوں کا علاج مفت ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہا مےں لوگوں سے کہنا چاہتاہوں کہ وہ دل کھول کر شوکت خانم کو زکواة دےں کےونکہ آپ کی زکواةکسی بلڈنگ ےا مشےن کی خر ےداری کےلئے نہےں صرف مر ےضوں کے علا ج کےلئے استعمال ہوگی مےں وزےر اعظم ہوں ےا نہ ہوں مےں شوکت خانم کی فنڈ رےزنگ تقر ےب مےں شرےک ہوگا ۔قبل ازیں ہفتہ کو بنی گالہ میں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل ہیلتھ ٹاسک فورس کا اجلاس منعقد ہوا جس میں وزیر اعظم عمران خان نے ملک بھر میں صحت کی سہولتوں اوردواں کی قیمتوں کا جائزہ لیا۔ وزیر اعظم عمران خان نے دوا ﺅں کی قیمتیں عام آدمی کی پہنچ تک رکھنے کی ہدایت کر تے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں علاج کی سہولتوں کو معیاری اور آسان بنایا جائے، علاج معالجے کی سہولتیں عام آدمی کی دسترس سے باہر نہ ہوں۔اجلاس میں وزیر اعظم کو صحت کے قومی پروگرامز، ہیلتھ کارڈ اور صحت سے متعلق امور پر بریفنگ دی گئی، ملک بھر میں طبی سہولتوں اور دواں کی قیمتوں میں اضافے کے معاملے پر غور کیا گیا۔اجلاس میں معاون خصوصی ظفر مرزا، سیکریٹری ہیلتھ زاہد سعید اور دیگر حکام شریک ہوئے، معاون خصوصی برائے قومی صحت ڈاکٹر ظفراللہ مرزا اور صحت حکام کی جانب سے بریفنگ دی گئی، وزیر اعظم کو صحت سہولت کارڈز کے حوالے سے آگاہ کیا گیا۔ملک بھرمیں نئے ہسپتال، پنجاب میں ڈاکٹروں کی ہڑتال اور بورڈ آف گورنر پر غور کیا گیا۔

وزیراعظم 

لاہور(جنرل رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان گزشتہ روز ایک روزہ دورے پر لاہور پہنچے ،جہاں گورنر پنجاب چودھری سرور،وزیراعلی عثمان بزدار اور،وزےر خارجہ شاہ محمود قر ےشی نے ان سے ملاقاتیں کیں ۔ ملاقات میں وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے وزیر اعظم کو داتا دربار دھماکے کی تحقیقات میں پیشرفت پر بریفنگ دی۔ سردار عثمان بزدار نے وزیراعظم کو پناہ گاہوں کی تکمیل اور رمضان بازار میں دی جانےوالی سبسڈی کے حوالے سے آگاہ کیا۔سردار عثمان بزدار نے اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے خصوصی بریفنگ دی ۔وزیراعظم عمران خان سے گورنر پنجاب چودھری سرور کی ملاقات میں باہمی دلچسپی امورپر تبادلہ خیال کیاگیا،علاوہ ازیں وزیر اعظم عمران خان نے وزیر اعلیٰ سردار عثمان بزدار کے ساتھ صوبائی کابینہ کے اجلاس کی مشترکہ صدارت کی ۔وزیر اعظم عمران خان نے پنجاب حکومت کو ترقیاتی منصوبوں میں پرائیویٹ سیکٹر کو شامل کرنے پر خصوصی توجہ دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کے پاس مالی وسائل محدود ہوتے ہیں ، پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے مختلف ماڈلز کو لاگو کیا جائے تاکہ حکومت پر بوجھ کم پڑے،ہر ترقیاتی منصوبہ عوامی فلاح و بہبود کیلئے ہونا چاہیے اور اسکی مدت تکمیل اور فعالیت کو مدنظر رکھتے ہوئے تشکیل دیا جائے۔ کابینہ اجلاس میں آئندہ مالی سال 2019-20میں ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ بارے بریفنگ دی گئی ۔وزیر اعظم عمران خان نے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے پاس مالی وسائل محدود ہوتے ہیں اس لئے ترقیاتی منصوبوں میں پرائیویٹ سیکٹر کو شامل کرنے پر خصوصی توجہ دی جائے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری سب سے بڑی قوت ہماری افرادی قوت ہے،ترقیاتی منصوبوں میں ہنر مند افراد کیلئے روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع فراہم کریں،زارعت کے فروغ اور پیداوار میں اضافے کیلئے مخصوص پراجیکٹ شروع کیے جائیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ صرف میٹرو بس پر 12ارب روپے کی سبسڈی دی جارہی ہے،یہ پیسہ صحت اور تعلیم کےلئے مختص کیا جا سکتا تھا۔انہوںنے کہا کہ ہماری حکومت کاروبار کرنے میں آسانی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے، سرمایہ کاری کے طریقہ کار کو آسان بنائیں۔ون ونڈو آپریشن کے تحت سرمایہ کاروں کو سہولت فراہم کریں۔ وزیراعظم عمران خان نے پنجاب حکومت کو منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف فوری کارروائی اور صوبائی کابینہ کے ارکان کو رمضان بازاروں کی سخت نگرانی کرنے کی ہدایت کی۔

صوبائی کابینہ سے خطاب

مزید : صفحہ اول