جعلی شادیاں ،11چینی باشندے جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے ،2پاکستانی ملزموں کو جیل بھجوا دیا گیا

جعلی شادیاں ،11چینی باشندے جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے ،2پاکستانی ...

لاہور ( مانےٹر نگ ڈےسک) لاہور کی مقامی عدالت نے پاکستانی لڑکیوں سے جعلی شادیاں کرکے چین میں ان سے جسم فروشی کرانے کے الزام میں گرفتار 11 چینی باشندوں کو مزید دو روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کر دیا جبکہ دو پاکستانی ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا گیا ۔ پاکستان کے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے)کے ہیومن ٹریفکنگ سیل نے پاکستانی لڑکیوں سے شادی کرنے اور ان سے جسم فروشی کرانے والے گروہ کے چینی سربراہ سمیت اب تک ایک درجن سے زائد ملزمان کو گرفتار کیا ہے۔ایف آئی اے نے 11چینی باشندوں اور دو پاکستانی شہریوں کو ہفتہ کے روز جوڈیشل مجسٹریٹ عامر رضا بیٹو کی عدالت کے سامنے پیش کیا۔عدالتی حکم پر ملزموں کی حاضری مکمل کر لی گئی ۔ ایف آئی اے کی جانب سے ملزموں کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی ۔ گرفتار چینی باشندوں نے مترجم کے ذریعے عدالت میں موقف اپنایا کہ ہم نے کچھ نہیں کیا کاروبار کے لئے پاکستان آئے۔ جس پر عدالت نے کہا کہ تفتیش کا عمل مکمل ہونے دیں پھر عدالت جائزہ لے گی۔عدالت نے 11چینی شہریوں کو مزید 2روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے جبکہ 2پاکستانی ملزمان انصر اور شوکت کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا۔جوڈیشل مجسٹریٹ نے ملزموں کو 13 مئی کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم بھی جاری کیا ۔

چینی باشندے 

بیجنگ ،اسلام آباد(مانیٹر نگ ڈیسک،صباح نیوز)بیجنگ میں پاکستانی سفارتخانے نے کہا ہے کہ شکایات پراب تک تقریبا 20 متاثرہ لڑکیوں کوپاکستان واپس بھجوایا جا چکا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق چینی باشندوں کی پاکستانی لڑکیوں سے جعلی شادیوں کے معاملے سے متعلق بیجنگ میں پاکستانی سفارتخانے نے بتایا کہ شکایات پر اب تک تقریبا 20متاثرہ لڑکیوں کو پاکستان واپس بھجوایا جاچکا ہے۔دوسری جانب چینی باشندوں کی پاکستانی لڑکیوں سے شادی کے معاملے پر ترجمان دفتر خارجہ کا موقف بھی سامنے آگیا۔ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ چینی باشندوں کی پاکستانی لڑکیوں سے شادی کے معاملے پر پاکستان اور چین کے متعلقہ حکام رابطے میں ہیں اور متاثرہ افراد کو انصاف دلانے کیلئے کوشاں ہیں۔ چینی سکیورٹی اہلکاروں نے پاکستان کا دورہ کیا اورچینی حکومت کی جانب سے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ دفتر خارجہ اور پاکستانی سفارتخانہ صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہے، دونوں ممالک کے حکام مجرموں کو کٹہرے میں لانے کیلئے پرعزم ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ چین کے مطابق جسم فروشی اور اعضا کی فروخت کے شواہد نہیں ملے کسی بھی پاکستانی خاتون کی شکایت پر فوری کارروائی کی جارہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان اور چین ہر طرح کے حالات میں سٹریٹجک پارٹنر ہیں دونوں ممالک دوستی کے تعلق کو مضبوط بنانے کیلئے پرعزم ہیں۔

دفتر خارجہ

مزید : صفحہ اول