نوشہرہ میں دوسری بار سستا بازار بھی ناکام 

نوشہرہ میں دوسری بار سستا بازار بھی ناکام 

نوشہرہ(بیورورپورٹ) نوشہرہ میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے دوسری بار لگایا گیا سستا بازار بری طرح ناکام کوئی دکاندار اور ریڑی بان سٹال لگانے کیلئے تیار نہیں کیونکہ مہنگائی کا بم حکومت نے گرایا ہے عوام نے نہیں اگر حکومت حقیقی معنوں میں عوام کو ریلیف دینے میں مخلص ہے تو سبسڈی دے کر سستی اشیائے خورد نوش عوام کے لئے مہیا کریں تاکہ عوام واقعی تبدیلی محسوس کریں اشتہارات اور جھوٹے وعدوں سے عوام کو ورغلایا نہیں جاسکتا20کلو فی آٹے کا تھیلا 700 روپے کی بجائے 850 روپے میں فروخت ہورہا ہے کیا یہ سستا بازار ہے سبزیاں،فروٹ، گوشت، دودھ، دہی اور دیگر اشیاء من مانے ریٹ پر فروخت ہورہے ہے دکاندار اور ریڑی بان ہاتھ پے ہاتھ رکھ کر گاہک کا انتظار کررہے ہیں غریب عوام صرف قیمتیں معلوم کرکے خالی ہاتھ گھر لوٹ جاتے ہیں ضلعی انتظامیہ کا نرخ کنٹرول کرنے میں بری طرح ناکام ہوچکے ہیں حکومت کے بھاری ٹیکسز کے نفاذ کے علاوہ رہی سہی کسر دکانداروں نے پوری کردی اور مقامی تاجر بھی من مانے ریٹ وصول کررہے ہیں دکانداروں نے سرکاری نرخ نامے غائب کردئیے ہیں۔ 

مزید : پشاورصفحہ آخر