” ہم نے سوچا بادلوں کی وجہ سے ان کو ہمارے جہاز ریڈار پر نظر نہیں آئیں گے “ بالاکوٹ حملے پر مودی نے ایسی بات کہہ دی کہ پوری دنیا ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہو گئی

” ہم نے سوچا بادلوں کی وجہ سے ان کو ہمارے جہاز ریڈار پر نظر نہیں آئیں گے “ ...
” ہم نے سوچا بادلوں کی وجہ سے ان کو ہمارے جہاز ریڈار پر نظر نہیں آئیں گے “ بالاکوٹ حملے پر مودی نے ایسی بات کہہ دی کہ پوری دنیا ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہو گئی

  

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی فضائیہ نے 26 فروری کو پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی اور بھارتی طیارے بالاکوٹ کے ایک مقام پر پے لوڈ گرا کر فرار ہو گئے جس پر اب انڈیا کے وزیراعظم نریندر مودی نے ایسی روداد سنا دی ہے کہ سوشل میڈیا کیا پوری دنیا ہی ان کی بات سن کر ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہو گئی ہے اور ہر طرف ان کا خوب مذاق اڑایا جارہاہے جبکہ سوشل میڈیا پر مضحکہ خیز میمی بھی چل پڑی ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے مقامی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ”بارش ہو رہی ہے اور بادل بھی ہیں تو اس سے فائدہ یہ ہو گا کہ بھارتی طیارے پاکستان کے ریڈار سے بچ جائیں گے اور پھر میں نے حملے کی اجازت دیدی ۔“بھارتی وزیراعظم نے انٹرویو ” نیشن نیوز “ نامی ٹی وی چینل کو دیا ، جس دوران انہوں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ” میں 9 بجے سٹرائیک کی تیاری کے حوالے سے ریویو کیا اور اس کے بعد 12بجے دوبار ریویو کیا ، ہمارے سامنے مسئلہ تھا کہ اس وقت اچانک موسم خراب ہو گیا ، بہت بارش ہوئی ، میں حیران ہوا ابھی تک ملک کے اتنے بڑے پنڈت لوگ مجھے گالیاں دیتے ہیں ، ان کا دماغ یہاں نہیں چلتا ، میں پہلی مرتبہ بول رہاہوں کہ ایک لمحے میرے دل میں آیا کہ موسم میں ہم کیا کریں ؟ بادل ہیں جاپائیں گے یا نہیں ؟ اس وقت ایکسپرٹ کی رائے تھی کہ تاریخ بدل دیں ۔ “

بھارتی وزیراعظم کا انٹرویو کے دوران کہنا تھا کہ ’ ’ اس وقت میرے ذہن میں دو خیال آئے ، ایک سیکریسی ، ابھی تک سب ” راز“ تھا ، رازداری میں اگر ڈھیل ہو تی تو ہم کچھ نہیں کر سکتے تھے ، پھر ہم کرنا ہی نہیں چاہیے تھا ، دوسری بات میں ایسا شخص نہیں ہو جو ان سب سائنس کا علم رکھتا ہوں ،لیکن میں نے کہا کہ اتنے (کلاوڈ ) بادل ہے ، بارش ہو رہی ہے تو ایک فائدہ ہے ، کیا ہم ریڈار سے بچ سکتے ہیں ، میں نے کہ میری سوچ ہے کہ بادلوں سے فائدہ بھی ہو سکتاہے ، سب الجھن میں تھے کیا کریں ، پھر بلاآخر میں نے کہا کہ ٹھیک ہے آپ لو گ جائیں اور پھر وہ چل پڑے ۔“

ویڈیو دیکھیں:

یاد رہے کہ 27 فروری کو پاکستان نے بھارتی کی جانب سے سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرنے پر اپنی حدود میں رہتے ہوئے بھر پور طریقے سے جواب دیا تاہم اگلے روز بھارتی طیاروں نے ایک مرتبہ پھر سے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی کرنے کی کوشش کی لیکن پاک فضائیہ نے شاندار کارروائی کرتے ہوئے دشمن کے دو طیارے مار گرائے اور ایک پائلٹ ابھی نندن کو بھی گرفتار کر لیا جسے بعد ازاں عمران خان نے امن کے قیام اور کشیدگی میں کمی کیلئے فوری رہا کرنے کا اعلان کیا تاہم پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی جاری رہی جس کے باعث ایک مہینے تک فضائی حدود بھی بند رکھی گئیں ۔

بھارت کی جانب سے دعویٰ کیا گیا کہ بھارتی پائلٹ ابھی نندن نے طیارے سے نکلنے سے پہلے پاکستان کا ایک ایف سولہ اپنے مگ طیارے سے تباہ کر دیا تھا تاہم پاکستان نے بھارتی دعوے کی تردید کرتے ہوئے بیان جاری کیا کہ پاکستان نے کارروائی میں ایف سولہ طیارے استعمال ہی نہیں کیے ہیں تاہم بعد ازاں پاکستان نے امریکی حکام کو دعوت دی کہ وہ آئیں اور پاکستان میں موجود ایف سولہ طیاروں کی گنتی کر لیں اور اس کے بعد غیر ملکی جریدے ’’ فارن پالیسی‘‘ نے ایک رپورٹ شائع کی جس میں پاکستان کے موقف کو درست قرار دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان کے تمام طیارے گنتی میں پورے ہیں اور بھارت کو اپنےجھوٹے دعوے پر پوری دنیا کے سامنے رسوائی کا سامنا کرنا پڑا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی