وہ جگہ جہاں کا پانی جسم کو چھو بھی لے تو لال نشان پڑ جاتے ہیں

وہ جگہ جہاں کا پانی جسم کو چھو بھی لے تو لال نشان پڑ جاتے ہیں
وہ جگہ جہاں کا پانی جسم کو چھو بھی لے تو لال نشان پڑ جاتے ہیں

  


کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا یوں تو سرسبزوشاداب ملک ہے لیکن اس میں ایک جگہ ایسی ہے جہاں مسلسل خشک سالی کی وجہ سے پانی اس قدر زہریلا ہو چکا ہے کہ پینا تو درکنار، جسم کو چھو بھی لے تو جلد پر سرخ نشان پڑ جاتے ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق آسٹریلیا کے اس قصبے کا نام کولرینبری ہے جہاں کے پانی سے لوگ نہا بھی نہیں سکتے۔ ان لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ نہاتے ہیں تو ان کے جسم پر سرخ نشان پڑ جاتے ہیں اور دانے نکل آتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق یہ علاقہ کبھی بہت زرخیز ہوا کرتا تھا تاہم زراعت کے لیے پانی زیادہ استعمال ہونے کے باعث اس علاقے میں بہنے والا ’بیروون‘ نامی دریا خشک ہو گیا، جس کے بعد یہ علاقہ بے آب و گیاہ چٹیل میدان بن کر رہ گیا۔ اب اس علاقے میں پینے کا پانی ناپید ہو چکا ہے اور قریب ترین سپرمارکیٹ اس قصبے سے 2گھنٹے کی ڈرائیو کے فاصلے پر واقع ہے۔ اس قصبے میں 650لوگ رہتے ہیں جو اپنی بقاءکی جنگ لڑ رہے ہیں۔ ان لوگوں کو رضاکار پانی کی بوتلیں پہنچا رہے ہیں جن پر ان کا گزارا ہو رہا ہے۔

Facebook

مزید : ڈیلی بائیٹس