اینٹی رائٹ فورس کی خاتون اہلکاروں کی مبینہ مشکوک سرگرمیوں کا انکشاف

اینٹی رائٹ فورس کی خاتون اہلکاروں کی مبینہ مشکوک سرگرمیوں کا انکشاف

  

لاہور(کرائم رپورٹر)گمنام کانسٹیبل کی جانب سے مبینہ طورپراینٹی رائٹ فورس ہیڈ کوارٹر میں تعینات لڑکیوں پر مختلف الزامات لگائے گئے ہیں۔ سی سی پی او کو دی جانے والی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ وہ اینٹی رائیٹ فورس میں چار ماہ سے تعینات ہے، درخواست گزار کے مطابق اینٹی رائٹ فورس میں بدعنوانی ہورہی ہے جو دن بدن بڑھتی جارہی ہے۔ ہم سب کیلئے اور پولیس ڈپارٹمنٹ کیلیے قابل شرم بات ہے جو کچھ یہاں چل رہا ہے لیڈیز لائن افسر مدیحہ عالم لڑکیوں کو دوران گنتی گالیاں دیتی ہے اور نسل تک نہیں چھوڑتی ہیں۔ لائن آفسر گنتی میں موبائل پہلے ہی جمع کرلیتی ہے۔ درخواست گزار نے کہا کہ صالحہ ہاشمی اور عمر کو ٹاؤن شپ کے ہوٹلوں اور پیکجز مال میں کئی بار دیکھا گیا ہے

جبکہ میری والد اور والدہ فوت ہوچکے ہیں۔درخواست گزار نے الزام عائد کیا کہ لائن افسر کہتی ہیں کہ میں نے اپنی سروس میں افسران سے تعلق رکھا ہوا ہے اور کچھ افسران کے بیٹے میری مٹھی میں ہیں۔ میرا تم کیا میڈیم ایس پی بھی کچھ نہیں بگاڑ سکتی اور میڈٰم عائشہ بٹ میرے بائیں ہاتھ کا کھیل ہے۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ یہاں پر انصاف نہیں کیا جاتا جو لڑکیاں لیڈی لائن افسر کوچیزیں لاکر دیتی ہیں انکی نا تو غیر حاضری لگتی ہینہ دیگر کو ئی نقصان ہوتا ہے۔ لیڈی کانسٹیبل مافیا جو کہ اپنی بہن کے پارلر سے سامان لاکر دیتی ہے اور لائن افسر کی داڑھی بھی مونڈھتی ہے۔ لیڈیز مافیا کا جو گروپ ہے جس میں صالحہ ہاشمی اور ثمرہ وغیرہ ہیں صالحہ ہاشمی کا تعلق بھی ڈی ایس پی کے ریڈر کانسٹیبل عمر سے ہے جس کی وجہ سے آئے دن وہ کبھی میڈیکل اور کبھی چھٹی پرہوتی ہے اور ناجائز تعلق کا فائدہ اٹھاتی ہیں۔ اور لیڈی لائن آفیسر کو ہاسٹل کے پیچھے بھی کسی افسر کے بیٹے کو اشارہ کرتے اور اسکے گھر جاتے دیکھا گیا ہے اس کی وجہ سے محررز کو بھی کھلی اجازت ملی ہوئی ہے محرر آمنہ شوکت کئی لڑکوں کیساتھ تعلق رکھتی ہیں اور انکو دوسری لڑکیوں کے نمبر دیتی ہے۔ اسکے کانسٹیبل اقرار حمزہ، ذوہیب اور جے ڈی او عاطف کے ساتھ ناجائز تعلق ہیں اور فخر سے کہتی ہیں کہ میڈیم نے کہا ہے زندگی ایک بار ملتی ہے اور محرر صاحبہ اقرا ہسپتال والے لڑکے رؤف کے ساتھ ہاسٹل سے بیٹھ کر جاتی ہے۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ کانسٹیبل کنزہ نے تو حد ہی کردی ہے ہاسٹل کے برا?مدے میں ڈانس کرتی ہیجبکہ لوگ دیکھ رہے ہوتے ہیں اور نیچے بیرک میں عرفان نامی لڑکا اسکے ڈانس کی حوصلہ افزائی بھی کرتا اور اپنی موٹر سائیکل پر ڈرائیونگ سیکھاتا ہے اور کنزہ گجر جے ڈی او یوسف کے ساتھ ناجائز تعلق کو فخر سے کہتی ہے کوئی نہیں میرے یوسف جیسا پیارا۔ درخواست گزار نے اپیل کی ہے کہ اینٹی رائیٹ فورس میں ایسی گھناؤنی حرکات کرنیوالوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے اور انکے ٹرانسفر کیے جائیں۔سی سی پی او لاہور نے گمنام سپاہی کی درخواست پر ایس پی ڈولفن عائشہ بٹ کو انکوائری کا حکم دے دیا ہے۔ایس ڈولفن عائشہ بٹ کا کہناہے کہ مجھے درخواست موصول ہوگئی ہے اس پرانکوائری کی جارہی ہے۔ جو درخواست دی گئی ہے اس میں مدعی سامنے نہیں آیا اس لیے ہم اپنے طورپردرخواست میں نامزد اور دیگر ملازمین بیان لے رہے ہیں۔ عائشہ بٹ نے کہا کہ اینٹی رائٹ فورس میں لڑکیاں غیر اخلاقی حرکات کے کوئی ثبوت نہیں ملے۔ ہیڈٰ کوارٹرز میں لگے سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیجز بھی چیک کی جارہی ہے۔

مزید :

علاقائی -