واضح رہے کہ گذشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مال بہترمعیشت کیلئے زرعی شعبہ کی ترقی ضروری، ماہرین

واضح رہے کہ گذشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مال بہترمعیشت کیلئے زرعی شعبہ ...

  

اسلام آباد (اے پی پی) ماہرین نے کہا ہے کہ پاکستان گندم، چاول، کپاس، گنا، آم اور مالٹا پیدا کرنے والے دنیا کے بڑے ممالک میں شامل ہے۔ معروف تجزیہ کار اور زرعی ماہر ڈاکٹر محمد اسماعیل کمبھار نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کی معیشت میں زرعی شعبہ کا کردار بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجموعی قومی پیداوار (جی ڈی پی) میں زرعی شعبہ کا حصہ 18.5 فیصد ہے جبکہ مجموعی افرادی قوت کے 38.5 فیصد حصہ کو روزگار بھی فراہم کرتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں اگائی جانے والی بڑی فصلیں گندم، کپاس، چاول، مکئی اور گنا وغیرہ جی ڈی پی میں 4 فیصد کی حصہ دار ہیں جبکہ چھوٹی فصلیں جی ڈی پی میں 2 فیصد کی حصہ دار ہیں اور لائیو سٹاک کا شعبہ مجموعمی قومی پیداوار میں 11 فیصد کا شراکت دار ہے۔ انہوں نے کہا کہ زرعی شعبہ کی ترقی سے قومی معیشت کے استحکام کے مطلوبہ اہداف کے حصول کو یقینی بنایا جا سکتا ہے جس سے دیہی معیشت کی بہتری اور روزگار کی فراہمی کے مواقع بھی بڑھائے جا سکتے ہیں۔

مزید :

کامرس -