لاک ڈاؤن سے تاجر‘ وکلاء برادری سب سے زیادہ متاثر‘ سینئر قانون دان کا افطار ڈنر سے خطاب

لاک ڈاؤن سے تاجر‘ وکلاء برادری سب سے زیادہ متاثر‘ سینئر قانون دان کا افطار ...

  

ملتان (نیوز رپورٹر)سابق صدر ہائیکورٹ بار ملتان سینیئر قانون دان سید اطہر حسن شاہ بخاری نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن کے باعث چھوٹے تاجر اور وکلاء برادری سب سے زیادہ متاثر ہوئی ملکی اکانومی میں اہم کردار کے(بقیہ نمبر48صفحہ6پر)

حامل تاجر آج تاریخ کے اس موڑ پر کھڑے ہیں جہاں ان کی بقاء اور ان کا وجود برقرار رکھنا چیلنج کی حیثیت اختیار کرچکا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیمبر آف سمال ٹریڈرز جنوبی پنجاب کے صدر ملک نیاز محمد بھٹہ کی جانب سے اپنے اعزاز میں منعقدہ افطار ڈنر کے موقع پر موجود تاجر نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے لاک ڈاؤن کے باعث پیدا ہونے والی صورتحال کا جائزہ لیا اور حکومتی اقدامات پر تبادلہ خیال کیا اور غلہ و سبزی منڈیوں کو لاک ڈاؤن کے دوران کھلا رکھنے پر تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ ان منڈیوں کو حفاظتی انتظامات نہ ہونے کے باوجود حکومتی سرپرستی میں لاک ڈاؤن کے دوران کھلا رکھا گیا جبکہ چھوٹا تاجر اپنی بقاء کے لیے تھوڑا سا شٹر کھولا تو پولیس کارپوریشن کے اہلکاروں نے جرمانے عائد کئے اور رشوت تک بٹوری انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک تاجر برادری اور صارفین کے مابین بہترین کاروباری شراکت کا مہینہ ہوتا ہے تاہم تاجر تو بند رہے یہ کاروبار پولیس نے کھل کر کیا چیمبر سمال ٹریڈرز ضلع ملتان کے نائب صدر ملک عزیز الرحمن کمبوہ نے کہا کہ حکومت لاک ڈاؤن کے باعث شدید متاثر ہونے والے چھوٹے کاروباری طبقہ اور وکلاء کے لیے امدادی پیکج کا عملی اقدام کرے بصورت دیگر تاجر اور وکلاء عید کے بعد میدان لگائیں گے اور حکومت کی اینٹ سے اینٹ بجا دیں گے اس سلسلہ میں جنوبی پنجاب بھر کے تاجر اور وکلاء کا مشترکہ کنونشن کا انعقاد کیا جائے گا جس میں آئندہ کا لائحہ عمل دیا جائے گا اس موقع پر مہر شاکر،اکمل خان بلوچ،ڈاکٹر طیب ملک،رانا حیدر علی،قمر زمان خان وزیر،چوہدری ارشد،آصف نعیم بھٹہ،چوہدری خالد مولا،عرفان گورمانی،ندیم بھٹہ دیگر نے شرکت کی۔

خطاب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -