چین کورونا وائرس کے سب سے پہلے مرکز ووہان میں اب کیا کرنے والا ہے؟

چین کورونا وائرس کے سب سے پہلے مرکز ووہان میں اب کیا کرنے والا ہے؟
چین کورونا وائرس کے سب سے پہلے مرکز ووہان میں اب کیا کرنے والا ہے؟

  

بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن)چینی حکومت نے کورونا وائرس کے سب سے پہلے مرکز ووہان میں ایک بار پھر تمام افراد کے ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ کیا ہے اور یہ ٹیسٹ صرف دس دن میں مکمل کیے جائی گے۔ووہان میں ایک کروڑ دس لاکھ لوگ آباد ہیں۔

برطانوی نیوز ایجنسی رائٹرز کے مطابق چینی حکومت نے ووہان کے تمام اضلاع کے متعلقہ حکام کوہدایات جاری کی ہیں کہ وہ دس دنوں میں اپنے علاقہ میں مقیم تمام افراد کے ٹیسٹ کرنے کو یقینی بنانے کیلئے اپنی حکمت عملی پیش کریں۔

رائٹرز کے مطابق اس حوالے سے ووہان کی انتظامیہ کا موقف لینے کی کوشش کی گئی ہے تاہم انہوں نے فوری طور پر کوئی جواب نہیں دیا ہے۔

خیال رہے کورونا وائرس سب سے پہلے اسی شہر میں پھیلا تھا جس کے بعد حکومت نے تقریبا ایک ماہ طویل لاک ڈاون لگا دیا تھاجو آٹھ اپریل کو اٹھالیا گیا۔ گزشتہ دنوں چینی حکومت نے اعلان کیا تھا کہ وہاں اب ایک بھی مریض زیر علاج نہیں ہے تاہم اب ایسی اطلاعات آرہی ہیں کی ووہان شہر کے ایک کروڑ دس لاکھ لوگوں کے ٹیسٹ کروانے کی تیاریاں ہورہی ہیں۔

 کچھ عرصے تک یہ لگ رہا تھا کہ معمولات زندگی بحال ہو رہی ہے، سکول کھل رہے ہیں اور کاروبار کے ساتھ ساتھ پبلک ٹرانسپورٹ واپس معمول کے مطابق کام کر رہے ہیں۔

لیکن اب نئے متاثرین کی تصدیق کے بعد یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ کووڈ 19 دوبارہ پھیل سکتا ہے جس کے لیے فوری اقدامات کا فیصلہ کیا جا رہا ہے۔

یہ تمام نئے متاثرین ایک رہائشی علاقے سے رونما ہوئے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -