دورہ سعودی عرب کامیاب رہا ، پانچ معاہدوں پر دستخط ہوئے ، وزیر خارجہ 

دورہ سعودی عرب کامیاب رہا ، پانچ معاہدوں پر دستخط ہوئے ، وزیر خارجہ 
دورہ سعودی عرب کامیاب رہا ، پانچ معاہدوں پر دستخط ہوئے ، وزیر خارجہ 

  

ملتان ( ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دورہ سعودی عرب ولی عہد محمد بن سلمان کی دعوت پر تھا ، دورہ کامیاب رہا جس میں پانچ معاہدوں پر دستخط ہوئے ۔

ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دورہ سعودی عرب سے ان لوگوں کے عزائم خاک میں مل گئے جو پاک سعودیہ تعلقات میں کشیدگی چاہتے تھے ،کہا گیا کہ پاکستان کی کھچائی ہو گی ، مجھ پر بھی مختلف کالم لکھے گئے مگر الحمد اللہ دورہ بے حد کامیاب رہا جس میں دو معاہدوں پر وزیر اعظم ، دو معاہدوں پر وزیر داخلہ اور ایک معاہدے پر میں نے دستخط کئے ۔ سعودی عرب کے ساتھ معاہدے کو سعودی پاکستان سٹریٹجک کونسل کا نام دیا گیا ہے ، اس پر وزیر اعظم عمران خان اور ولی عہد محمد بن سلمان نے دستخط کئے ہیں ۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دورہ میں سعودی عرب سے کھل کر بات ہوئی ، ولی عہد کی وزیر اعظم سے ون آن ون ملاقات ہوئی ، اہم وفود کی سطح پر ان کی طرف سے محمد بن سلمان ، وزیر داخلہ اور دفاع شامل تھے جبکہ پاکستان کی جانب سے وزیر اعظم ، آرمی چیف اور میں شامل تھا ۔عید کے بعد سعودی وزیر خارجہ کی قیادت میں سینئر آفیسرز کا وفد پاکستان آئے گا جو دفتر خارجہ میں سینئر آفیسرز سے ملاقات کرے گا اور اب تک ہونےو الے مذاکرات کو آگے لیکر چلے گا، اس گفتگو کے بعدمحمد بن سلمان دورہ پاکستان آئیں گے ۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ محمد بن سلمان نے سعودی عرب کی ترقی کیلئے ایک ویژن بنایا ہے جس کو انہوں نے 2030 کا نام دیا ہے ، اس کیلئے انہیں بے پناہ افرادی قوت چاہئے ہوگی ، انہوں نے طے کیا ہے کہ اس کیلئے مخصوص کوٹہ پاکستان کیلئے مخصوص کیا جائے گا، لاکھوں پاکستانیوں کے لئے روزگار کے مواقع کھلیں گے ، کویت کے ساتھ ویزوں کا مسئلہ مدت سے حل طلب تھا جو اب حل ہو گیا ہے ، انہوں نے کہا کہ پاکستانی و زیر خارجہ آئیں اور معاملات طے کریں ۔ایران میں بارہ سال سے پاکستانی کینو کی درآمدپر پابندی تھی، ان بارہ سالوں میں پیپلزپارٹی اور ن لیگ دونوں کے حکومتی ادوار بھی شامل ہیں ، لیکن ہماری حکومت کی کوشش سے اب اس پابندی کو ہٹا دیا گیا ہے، اب پاکستانی کنون ایران جا سکے گا۔

انہوں نے کہا کہ جس معاہدے پر میں نے دستخط کئے اس کے تحت پاکستان کو پانچ سو ملین ڈالرز دیے جائیں گے ، ان سے ہم ہائیڈرو پراجیکٹ ، پن بجلی اور سولر سے بجلی پیدا کر سکیں گے جس کے بعد ہمیں سستی بجلی میسر ہو گی ۔

مزید :

قومی -