ایک منفرد قسم کا ٹی وی چینل

ایک منفرد قسم کا ٹی وی چینل
ایک منفرد قسم کا ٹی وی چینل

  

پاکستان میں ٹی وی چینلوں اور الیکٹرانک میڈیا کی بھرمار ہے۔ان میں سے کوئی تازہ خبروں، تبصروں، ٹاک شوز کی وجہ سے مشہور ہے تو کوئی ڈراموں،سپورٹس، کھانوں، مذہبی پروگراموں، فلموں، صحت و تندرستی کے پروگراموں کی وجہ سے عوام میں مقبول ہے،تاہم ان ٹی وی چینلوں میں سے کوئی ایک ایسا چینل میری معلوماتمیں نہیں ہے، جو فیملی چینل کہلا سکے، جسے باپ، ماں، بیٹا، بیٹی، بہو اور بچے اکٹھے بیٹھ کر شوق سے دیکھ سکتے ہوں۔بچوں کی پسند کارٹون نیٹ ورک ہے تو باپ کی پسند نیوز چینل اور ٹاک شوز، ماں بیٹی اور بہو کی پسند ڈرامہ چینل ہے تو بیٹے کی پسند سپورٹس چینل ،غرض سب کی پسند علیحدہ علیحدہ ہے اور یہ فطری بھی ہے۔

خوشی کی خبر یہ ہے کہ پاکستان میں ایک ایسے ترک ٹی وی چینل کا آغاز ہو رہا ہے،جس میں سب کچھ یکجا کردیا گیا ہے،یعنی اس میں بچوں کے لئے کارٹون بھی ہیں اور ماں، بہو اور بیٹی کے لئے فیملی ڈرامے بھی۔ڈاکومنٹری بھی ہے اور ٹاک شوز بھی، سپورٹس بھی ہیں اور کھانے پکانے کے پروگرام بھی۔میوزک بھی ہے اور مذہبی و دینی پروگرام بھی.... غرض سب کی پسند کو ایک ٹی وی چینل میں سمو دیا گیا ہے۔اس ٹی وی چینل کا نام ایس ٹی وی پاکستان (STV)ہے اور یہ ترکی کے مشہور ٹی وی چینل سمان یولو کا اردوروپ ہے۔بہت سے ترکی ڈرامے اردو میں ڈب کئے جا رہے ہیں اور پاکستانی ڈرامے بھی پیش کئے جائیں گے۔ایس ٹی وی ترکی کا ایک اچھی اور مثبت ساکھ رکھنے والا ٹی وی چینل ہے،جس پر معاشرے کے سب طبقات کو یقین اور بھروسہ ہے۔

اطلاعات کے مطابق پیمرا میں ایس ٹی وی چینل کے لائسنس کے اجراءکے لئے پہلے ہی رجسٹریشن کے لئے رجوع کیا جا چکا ہے جو آخری مراحل ہے اور 1000سے زائد گھنٹے کی ٹرانسمیشن کے لئے پروگرام تیار ہیں۔امید کی جا رہی ہے کہ ایس ٹی وی اردو کی نشریات سے پاکستانی الیکٹرانک میڈیا میں ایک مثبت اضافہ ہوگا اور معیار مزید بلند ہوگا۔اس ٹی وی چینل کی ایک خاص بات یہ بھی ہے کہ اس کے تمام پروگرام اصلاحی اور اخلاقیات کے معیارات پر پورا اترتے ہیں۔ معاشرے میں مثبت اور تعمیری سوچ اور بہتری کے لئے سب پروگرام ترتیب دیئے گئے ہیں اور بھلائی کا پہلو ہر جگہ نمایاں ہے۔امید کی جارہی ہے کہ جلد ہی یہ ٹی وی چینل عوام میں مقبولیت حاصل کرلے گا اور ایک خاندان کے سب افراد مل کر اس ٹی وی چینل کے پروگرام دیکھا کریں گے۔باپ، بیٹا، ماں، بیٹی، بہو ،بچے سب اکٹھے بیٹھ کر اس کے پروگرام دیکھ سکیں گے۔امید کی جانی چاہیے کہ ایس ٹی وی پاکستان کی نشریات کے آغاز سے جہاں ہمیں ترک تہذیب و ثقافت ، تمدن کا پتہ چلے گا،وہاں معاشرے میں مثبت اصلاح کا پہلو بھی نمایاں ہوگا اور ہماری الیکٹرانک میڈیا کی انڈسٹری میں بہتری اور مقابلے کا رجحان آئے گا۔    ٭

مزید :

کالم -