پانی کی شدید کمی فوڈ سیکورٹی کےلئے چیلنج بنتی جا رہی ہے، چیئرمین پاکستان کسان ویلفیئر کونسل

پانی کی شدید کمی فوڈ سیکورٹی کےلئے چیلنج بنتی جا رہی ہے، چیئرمین پاکستان ...

فیصل آباد(بیورورپورٹ) پاکستان کسان ویلفیئر کونسل کے چیئرمین چوہدری عبداللطیف سہو نے کہاہے کہ زرعی استعمال کیلئے پانی کی شدید کمی فوڈ سیکورٹی کےلئے چیلنج بنتی جا رہی ہے جبکہ پاک بھارت سرحدی علاقوں میں نصب ہزاروں بھارتی ٹیوب ویلوں کے ذریعے پاکستان کے زیرزمین پانی کا غیر قانونی استعمال پاکستان میں نئے مسائل کی نشاندہی کر رہا ہے نیز بھارتی حکومت مشرقی پنجاب میں کسانوں کو ٹیوب ویل کیلئے فری بجلی فراہم کرنے پر سالانہ 500 ارب روپے سے زائد خرچ کر رہی ہے جبکہ فرٹیلائزر اور بیج وغیرہ جیسے زرعی مداخل پر سبسڈی اس کے علاوہ ہے لہٰذا پاکستان میں بھی کسانوں کیلئے نہ صرف زرعی مداخل پر سبسڈی میں اضافہ کیا جانا چاہئے۔

 بلکہ منڈیوں میں کسانوں کو آڑھتیوں کے رحم و کرم سے بچانے کیلئے ان کی سرپرستی بھی کی جانی چاہیے۔ میڈیاسے بات چیت کے دوران انہوںنے کہاکہ پاکستان میں غذائی پیداوار کو بڑھتی ہوئی آبادی کی ضروریات سے ہم آہنگ کرنے کیلئے حکومتی سطح پر انتظامی اقدامات کئے جانے چاہئیں تاکہ زرعی مداخل پر اخراجات کو کم رکھا جا سکے اور مو¿ثر مارکیٹنگ کی سہولیات سے کسانوں کی اقتصادی حالت میں بہتری لائی جا سکے۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش 15 ملین ایکڑ فٹ سے زائد نہ ہے جبکہ ہر سال 105ملین ایکڑ فٹ پانی ہماری کوتاہیوں کی وجہ سے سمندر کی نذر ہورہا ہے لہٰذا ہمیں ایک ذمہ دار اور دانشمند قوم کی حیثیت سے پانی ضائع کرنے کے اس رجحان کا خاتمہ کرنا ہوگا۔

مزید : کامرس


loading...