پاکستانی باﺅلرز کی عمدہ باﺅلنگ کیوی ٹیم پہلی اننگز میں 262 پر ڈھیر

پاکستانی باﺅلرز کی عمدہ باﺅلنگ کیوی ٹیم پہلی اننگز میں 262 پر ڈھیر

  

                       ابوظہبی( نیٹ نیوز)پاکستان اور نیوزی لینڈ مابین3 ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے پہلے ٹیسٹ کے تیسرے روز پاکستانی بیٹنگ کے بعد باﺅلرز نے بھی کیوی بلے بازوں کو چاروں شانے چت کر کے فالو آن کر دیا لیکن مصباح کا خود بیٹنگ کا فیصلہ‘ پوری ٹیم 262 رنز پر پویلین لوٹ گئی‘پاکستان نے کھیل کے اختتام پر بغیر کسی نقصان کے15 رنز بنا کر نیوزی لینڈ پر319 رنز کی سبقت حاصل کر لی چوتھے روز کا میچ شروع ہوا تو پاکستان کو پہلی کامیابی برینڈن میکولم کی صورت میں ملی وہ 33 کے مجموعی سکو رپر 18 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ اس کے بعد ولیم سن کھیلنے کیلئے آئے تاہم وہ بھی 38 کے مجموعی سکو رپر محض 3 رنز بناکر چلتے بنے۔ پاکستان کو تیسری کامیابی 47 کے مجموعی سکو رپر ملی اور آﺅٹ ہونے والے راس ٹیلر تھے وہ بغیر کھاتہ کھولے ذوالفقار بابر کی گیند پر اسد شفیق کو کیچ دے بیٹھے۔ اس موقع پر کورے اینڈرسن اور ٹام لیتھم نے ٹیم کو سنبھالا دیا تاہم نیوزی لینڈ کو چوتھا نقصان 130 کے کورے اینڈرسن کی صورت میں اٹھانا پڑا وہ 48 رنز بنا کر آﺅٹ ہو گئے۔ پاکستان کو پانچویں کامیابی 150 رنز پر ملی اور جمی نیشم 11 رنزبنا کر آﺅٹ ہو گئے۔ پاکستان کو چھٹی کامیابی ٹام لیتھم کی صورت میں ملی 215 رنز پر ملی وہ 103 رنز بنا کرراحت علی کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ نیوزی لینڈ کو ساتواں نقصان219 پر اس وقت اٹھانا پڑا جب کریگ ایک رن بنا کر آﺅٹ ہو گئے اور پاکستان کو اگلی کامیابی بھی 219 پر ملی اور ٹم ساﺅتھی بغیر کوئی رن بنائے آﺅٹ ہو گئے۔ نیوزی لینڈ کی نویں وکٹ 262 پر گری اور ایش سوڈھی 25 رنز بنا کر یاسر شاہ کی گیند پر بولڈ ہو گئے اور پاکستان کو آخری کامیابی بھی 262 پر ملی اور وکٹ کیپر بیٹسمین واٹلنگ42 رنز بنا کر ذوالفقار بابر کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹام لیتھم 103 اورکورے اینڈرسن 48 رنز بنا کر نمایاں رہے ۔پاکستان کی جانب سے راحت علی نے 4 اور ذوالفقار بابر نے 3 کھلاڑیوں کو گراﺅنڈ بدر کیا۔ اس موقع پر پاکستان نے نیوزی لینڈ کو فالو آن کرنے کی بجائے دوبارہ کھیلنے کا فیصلہ کیا اور چوتھے ر وز کا جب کھیل ختم ہوا تو پاکستان نے بغیر کسی نقصان کے15 رنزبنائے تھے اور محمد حفیظ5 اور اظہر علی9 رنز پر کریز پر موجود تھے جبکہ پاکستان کو نیوزی لینڈ پر319 رنز کی سبقت حاصل تھی۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -