بھٹہ مزدور میاں بیوی کو زندہ جلانے کے واقعہ پر لاہور بار کی ہڑتال

بھٹہ مزدور میاں بیوی کو زندہ جلانے کے واقعہ پر لاہور بار کی ہڑتال

  

لاہور(نامہ نگار)بھٹہ مزدور میاں بیوی کو زندہ جلانے کے واقعہ پر لاہور بار ایسوسی ایشن نے گزشتہ روز ہڑتال کرکے عدالتوں کا بائیکاٹ کیا ،ہڑتال کے باعث عدالتوں میں زیر سماعت 20 ہزار سے زائد مقدمات و دعویٰ جات التوا کا شکار ہوئے جبکہ ہزاروں کی تعداد میں سائلین مردوخواتین کو انتہائی پریشانی کا سامنا رہا۔کوٹ رادھا کشن میں بھٹہ مزدور شہزاد مسیح اور اس کی حاملہ بیوی شمع کو زندہ جلا نے کے واقعہ پرلاہور بار نے گزشتہ روز ہڑتال کی اور عدالتوں کا بائیکاٹ کیا اس موقع پر سیکرٹری جنرل چوہدری محمد سلیم لادی اور قسیم اسلم ہنجراءنے کہا کہ کوٹ رادھا کشن کے واقعہ نے انسانیت کو جھنجوڑ کر رکھ دیا ہے ہم ایسے انسانیت سوز واقعہ کی پر زور مذمت کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہم حیران ہے کہ ایسا کام کوئی انسان نہیں کرسکتا جنہوں نے بھی ایسا کیا ہے وہ جو جی چاہے ہوں مگر کم از کم انسان نہیں ہو سکتے انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان جو کہ پہلے ہی دہشت گردی کی لپیٹ میں ہے اور ملک ایک انتہائی نازک موڑ سے گزر رہا ہے تو ان حالات میں ایسے واقعات کا رونما ہونا کوئی چھوٹی بات نہیں تاہم اس واقعہ کی مکمل چھان بین ہونی چاہئے کیوں ہمارا ملک کے موجودہ حلات کے پیش نظر ایسے واقعات کے رونما ہونے میں پاکستان دشمن بیرونی قوتوں کو نظر انداز بھی نہیں کیا سکتا ۔وکلاءبرادری کا مطالبہ ہے کہ حکومت اور انوسٹی گیشن فورسز کا ان تمام حالات کا جائزہ لے کر اس کی مکمل تحقیقات کرکے اسے عوام کے سامنے ئے اور ذمہ داران کو قرار واقعی سزا دی جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -