چار ماہ گیس نہ ملی تو صنعتیں تباہ ،مزدور بیروزگار ہوجائنگے،افتخار بشیر

چار ماہ گیس نہ ملی تو صنعتیں تباہ ،مزدور بیروزگار ہوجائنگے،افتخار بشیر

 لاہور(وقائع نگار) تاجر رہنما و صدر گرائنڈنگ ملز ایسوسی ایشن پاکستان چوہدری افتخار بشیر سابق ایگزیکٹو ممبر لاہور چیمبرآف کامرس نے وفاقی حکومت کی جانب سے پنجاب کی صنعتوں کیلئے 15نومبرسے15مارچ تک گیس کی سپلائی بند کرنے پر تشویش کا اظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ صنعتی شعبہ کے لیے4ماہ گیس کی عدم فراہمی انڈسٹری کی تباہی کے مترادف ہے انہوں نے کہا کہ اگرصنعتوںکو گیس نہیں ملے گی تووہ بند بند اورملازم بے روزگار ہوجائیں گے ۔انہوں نے وزیراعظم سے مطالبہ کیا کہ وہ اس معاملہ میں مداخلت کریں اور انڈسٹریز کی مسلسل گیس کی بندش کے فیصلہ کو تبدیل کروائیں کیونکہ انڈسٹریز کومسلسل گیس کی بندش سے صنعتیںبحران میں مبتلا ہوجائیں گی اور بے روزگار ملازم احتجاجی تحریک شروع کرسکتے ہیں افتخاربشیر نے کہا کہ مستقبل میں گیس کی بڑھتی ہوئی ضروریات کو پوری کرنے کیلئے اور سوئی گیس کی مسلسل فراہمی کیلئے پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ ملکی معیشت کے لیے انتہائی ضروری ہے ،اس لیے عوامی مفادات کو مدنظررکھتے ہوئے منصوبہ کی تکمیل کیلئے ٹھوس اقدامات کیے جائیں اور اس منصوبہ کی راہ میں حائل تمام رکاوٹوں کو دور کرنے کیلئے عملی اقدامات کئے جائیںانہوں نے کہا کہ سندھ اور خیبر پختوانخواہ کی طرح پنجاب میں بھی صنعتوں کو مسلسل گیس فراہم کی جائے کیونکہ انڈسٹری کا پہیہ چلے گا تو ملک ترقی کرے کا اور ملک معاشی بحران سے نجات پائے گانیز روزگار کے وافر مواقع فراہم ہونگے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...