خیرپور:بس اور ٹرک کے تصادم میں 60جاں بحق،21خواتین اور17بچے شامل

خیرپور:بس اور ٹرک کے تصادم میں 60جاں بحق،21خواتین اور17بچے شامل

          خیر پور(بیورورپورٹ،مانیٹرنگ ڈیسک،اے این این، آن لائن)سوات سے کراچی جانے والے بس خیر پور میں ٹرک سے ٹکرا گئی جس سے 18بچوں سمیت 60افراد جاں بحق اور 12زخمی ہو گئے،المناک حادثے میں بس مکمل طور پر تباہ ہوگئی جس کے باعث لاشوں اور زخمیوں کو بس کا ڈھانچہ کاٹ کر نکالا گیا،بس کو آگ لگنے سے متعدد لاشیں جھلس گئیں،مرنے والوںمیں21خواتین بھی شامل ہیں،،حادثہ بس ڈرائیور کے غلط اوورٹیک کر نے کے باعث پیش آیا،صدر ممنون حسین ، وزیراعظم نواز شریف نے حادثے پر افسوس کا اظہارکیا ہے اور زخمیوںکے سرکاری خرچ پر علاج معالجے کی ہدایت کی ہے جبکہ گورنر سندھ نے تحقیقات کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق منگل کو سوات سے کراچی جانے والی بس خیر پور کے قریب نیشنل ہائی وے پر ٹھیڑی بائی پاس کے مقام پر ٹرک سے ٹکرا گئی جس کے نتیجے میں 57افراد مو قع پر جاں بحق اور15زخمی ہوگئے.بعد میں مزید3افراد دم توڑ گئے اور ہلاکتوں کی تعداد60ہو گئی۔جاں بحق ہونے والے افراد میں 18بچے اور 21خواتین بھی شامل ہیں۔بدقسمت بس میں 80 سے زائدافراد سوار تھے جبکہ ٹرک میں سوارافراد بھی زخمی ہوئے۔حادثہ صبح6بجے پیش آیا۔جس کے باعث بس الٹ کر مکمل تباہ ہو گئی اوربس میں آگ لگنے سے متعدد لاشیں جھلس گئیں۔عینی شاہدین کے مطابق حادثہ بس ڈرائیور کی غلطی سے پیس آیا جو ایک دوسری بس کو تیز رفتاری سے اوور ٹیک کر رہا تھا کہ اس دوران بس ٹرک سے ٹکرا گئی۔حادثے کے بعد لاشوں اور زخمیوں کو بس کی باڈی کاٹ کر نکالا گیا۔لاشوں کو سکھر اور خیر پور کے ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا اور ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر کے چھٹی پر گئے عملے کو بھی واپس بلا لیا گیا۔خیر پور سول ہسپتال کے ایم ایس ڈ اکٹر جعفر سومرو کے مطابق جاں بحق افراد میں زیادہ تعداد خواتین اور بچوں کی ہے۔ایم غلام جعفر سومرو نے 56ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے ۔ایم ایس کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں 18 بچے، 21 خواتین اور 17 مرد شامل ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اس واقعے میں 15 افراد زخمی ہوئے جن میں تین کی حالت تشویش ناک ہے۔ڈی سی او خیر پور نے کہا کوشش کریں گے کہ میتوں کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے ان کے آبائی علاقوں میں پہنچایا جائے۔اس سے پہلے ہائی وے پولس کے ایس ایس پی کیپٹن ریٹائرڈ فیصل عبداللہ کے مطابق منگل کی صبح خیر پور کے نزدیک ٹھیٹری بائی پاس پر مسافر بس اور ٹریلر کے درمیان تصادم ہوا۔انھوں نے کہا کہ سوات سے کراچی جانے والی مسافر بس مقامی وقت کے مطابق پونے پانچ بجے کے قریب ٹھیٹری بائی پاس پر واقع ایک پیٹرول پمپ سے تیل ڈلوانے کے بعد جیسے ہی سڑک پر آئی تو آنے والے ٹریلر سے ٹکرا گئی۔ انھوں نے بتایا کہ ابتدائی معلومات کے مطابق حادثہ بس ڈرائیور کی غفلت کی وجہ سے پیش آیا۔ڈی آئی جی موٹر وے سندھ اے ڈی خواجہ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ گھوٹکی سے لے کر کراچی تک سڑک کی حالت بہت بری ہے جگہ جگہ موٹر وے پر کام جاری ہے بس پشاور سے آرہی تھی ،بس ڈرائیور سے بے قابو ہو کر دوسرے ٹریک پر ٹرک سے جاٹکرائی،اس بس کو 100 کلو میٹر پہلے اوورلوڈنگ پر موٹر وے پولیس نے جرمانہ بھی کیا ۔حادثے کی بنیادی وجہ روڈ کی خراب حالت ہے۔ ریسکیو ذرائع کا کہنا ہے کہ حادثہ اتنا شدید تھا کہ حادثے کے بعد بس میں آگ لگ گئی ۔واقعہ پر صدر ممنوں حسین اور وزیر اعظم نواز شریف نے گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے تحقیقات کا حکم دے دیا اور رپورٹ طلب کر لی ہے ۔صدر اور وزیر اعظم نے زخمیوں کو سرکاری خرچ پر علاج معالجہ فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے، ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین اور گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے حادثے میں ہونے والے جانی و مالی نقصان پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور گورنر سندھ نے متعلقہ حکام کو حادثے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

حادثہ

مزید : صفحہ اول


loading...