دھرنے سے حکومت ،جمہوریت یا معشیت کو کوئی خطرہ نہیں :نواز شریف

دھرنے سے حکومت ،جمہوریت یا معشیت کو کوئی خطرہ نہیں :نواز شریف

  

                   برلن(خصوصی رپورٹ) وزیراعظم نواز شریف کی جرمن چانسلر اینجیلامرکل سے ملاقات میںپاکستان اور جرمنی نے دہشتگردی کے خاتمے کیلئے مل کر چلنے اور دو طرفہ تعلقات کے فروغ کا عزم ظاہر کیا گیا ہے۔دونوں رہنماﺅں کے درمیان چانسلر ہاﺅس میں ملاقات ہوئی جس میں دو طرفہ تعلقات، تجارت کے فروغ اور عالمی امور پر اہم بات چیت ہوئی۔

ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب میں وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کے جرمنی کیساتھ خوشگوار اور گہرے تعلقات ہیں اور پاکستان کی خارجہ پالیسی میں جرمنی کا اہم مقام ہے۔ پاکستان میں سماجی شعبے کی ترقی میں بھی جرمنی کا اہم کردار ہے۔ جرمن چانسلر اینجیلامرکل سے ملاقات میں دو طرفہ تعلقات اور اہم عالمی امور پر اہم بات چیت ہوئی۔ اینجیلامرکل کی قیادت میں جرمنی عالمی امن کے فروغ میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ پاکستان اور جرمنی مل کر دہشتگردی کا خاتمہ کرینگے۔ وزیراعظم نے کہاکہ دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان نے بڑی قربانیاں دی ہیں۔ پاکستان کی مسلسل حمایت پر جرمن چانسلر اینجیلامرکل کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ کئی سال سے عالمی سطح پر جرمنی ہمارا چوتھا بڑا شراکت دار ہے۔ چانسلر اینجیلامرکل پاکستان میں سرمایہ کاری کیلئے خصوصی دلچسپی لے رہی ہیں۔ توانائی فورم کے قیام میں جرمنی کے شکر گزار ہیں جبکہ جرمنی کی جانب سے فنی تربیت کے پروگرام کو وسعت دینے کا خیر مقدم اور شکریہ ادا کرتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں میاں محمد نواز شریف کا کہنا تھا کہ ملالہ یوسفزئی پاکستان میں انتہائی مقبول اور قدر کی نگاہ سے دیکھی جاتی ہیں۔ان کے پاکستان آنے پر خوش آمدید کہیں گے۔ وزیراعظم نے جرمن چانسلر اینجیلامرکل کو دورہ پاکستان کی دعوت بھی دی اور کہا کہ آئندہ سال ان کے دورہ پاکستان کے منتظر ہیں۔

پریس کانفرنس سے خطاب میں جرمن چانسلر اینجیلاا مرکل نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف سے مفید بات چیت ہوئی ہے۔ پاکستان کیساتھ دو طرفہ تعلقات آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔ پاکستانی برآمدات کو جرمنی میں خوش آمدید کہیں گے۔ جرمن چانسلر اینجیلامرکل نے ملالہ یوسفزئی کو نوبل انعام ملنے پر پاکستان کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ملالہ جیسی بہادر لڑکی پاکستان کی پہچان ہے۔

برلن (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں جاری دھرنے سے حکومت، جمہوریت یا معیشت کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے اور پارلیمنٹ ایک ایسا ادارہ ہے جہاں ملکی مسائل کے حل کے لئے بحث کی جائے نہ کہ دھرنوں پر باتیں کرکے قوم کا وقت ضائع کیا جائے، ہماری پوری توجہ ملکی مسائل پر مرکوزہے اورہم ان کو حل کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔ جرمنی میں پاکستانی نژاد بزنس کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم افواج پاکستان کی قربانیوں کو کبھی فراموش نہیں کرسکتی اور ہماری حکومت نے بھی آپریشن ضرب عضب کا اعلان کرکے ملک سے دہشت گردی کی جڑیں ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -