حکومت کی بہتر پالیسیوں سے تمام اقتصادی عشاریوں میں بہتری آئی، اسحق دار

حکومت کی بہتر پالیسیوں سے تمام اقتصادی عشاریوں میں بہتری آئی، اسحق دار ...

                         اسلام آباد(آئی این پی) وفاقی وزیر خزانہ اسحق ڈار نے کہا ہے کہ ایل این جی درآمد 2015ءکے آغاز میں شروع ہوجائےگی جبکہ رواں مالی سال کے دوران مالیاتی خسارہ 4.9 فیصد تک رہنے کی توقع ہے جو مئی تا ستمبر 2014ءکا مالیاتی خسارہ 1.2 فیصد تھا‘ موجودہ حکومت کی بہتر پالیسیوں کی بدولت جی ڈی پی گروتھ سمیت تمام اقتصادی اعشاریوں میں بہتری آئی جبکہ حالیہ دھرنوں اور احتجاج سے نہ صرف معاشی بہتری کی حوصلہ شکنی ہوئی بلکہ دنیا میں بھی پاکستان کی معاشی ساکھ کو نقصان پہنچا‘ مانیٹری اور ایکسچینج ریٹ پالیسی میں تسلسل کیلئے معیشت کا سہ ماہی بنیادوں پر جائزہ ضروری ہے۔ وہ مانیٹری و مالیاتی پالیسی کوآرڈینیشن بورڈ کے اجلاس کی صدارت کررہے تھے۔ اجلاس میں سیکرٹری خزانہ ڈاکٹر وقار مسعود‘ وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی‘ انسٹیٹیوٹ آف بزنس ایڈمنسٹریشن کے سربراہ ڈاکٹر عشرت حسین‘ گورنر اسٹیٹ بینک اشرف محمود وتھرا اور وائس چانسلر پائڈ یونیورسٹی ڈاکٹر اسد زمان نے بھی شرکت کی۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کی بہتر معاشی پالیسیوں کی بدولت گذشتہ مالی سال کے دوران چھ سال میں پہلی مرتبہ جی ڈی پی گروتھ ریٹ 4.14 فیصد پر پہنچادی اور مہنگائی کی شرح 17 ماہ میں 5.8 فیصد پر آگئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں ماہ کی پہلی سہ ماہی میں مالیاتی خسارہ 1.2 فیصد رہا جبکہ رواں مالی سال کے دوران 4.9 فیصد رہنے کی توقع ہے۔ اگر دھرنے نہ ہوتے تو زرمبادلہ کے ذخائر 30 ستمبر تک 15 ارب ڈالر کی حد پار کرجاتے۔ دھرنوں کی وجہ سے معاشی ترقی میں نہ صرف خلل آیا بلکہ بیرون ملک بھی پاکستانی معیشت کی ساکھ متاثر ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ گیس کی قلت پر قابو پانے کیلئے ایل این جی درآمد 2015ءکے آغاز میں شروع ہوجائے گی جبکہ مانیٹری اور ایکسچینج ریٹ پالیسی میں تسلسل کیلئے معیشت کا ہر تین ماہ بعد مفصل جائزہ ضروری ہے۔

اسحق ڈار

مزید : علاقائی


loading...