پیپلز پارٹی فوج کی سیاست میں مداخلت کی مخالف ہے، تنویرکائرہ

پیپلز پارٹی فوج کی سیاست میں مداخلت کی مخالف ہے، تنویرکائرہ

  

لاہور( نمائندہ خصوصی) سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی پنجاب تنویر اشرف کائرہ نے پاکستان تحریک انصاف کے چےئرمین عمران خان کی اس تجویز کو مسترد کیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ سپریم کورٹ کے تحت انتخابی دھاندلیوں کی تحقیقات کرائی جائیں جسمیں ایم آئی اور آئی ایس آئی کے نمائندوں کو بھی شامل کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ان کی اس تجویز کو حکومت اور سیاسی پارٹیوں کو سنجیدگی سے نہیں لینا چاہیے کیونکہ اسکے عملدرآمد سے دونوں اہم اداروں کے درمیان غلط فہمیاں اور شکوک وشبہات پیدا ہونے کا احتمال ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ انکی تجویز کو ماننے کا مطلب یہ ہے کہ پاک فوج کو اس فیلڈ میں الجھایا جائے جس سے معاشرے میں ایک بحث چھڑ جائے گی اور فوج کی ملک کے دفاع سے توجہ ہٹ سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ آئین میں ایسے انتظام کی کوئی گنجائش نہیں اسکے علاوہ ایسا کرنے سے ملک میں ایک خطرناک رجحان پیدا ہو سکتا ہے جو ملک کے سیاسی نظام کے تسلسل اور ترقی کے لیے نقصان کا باعث بنے گا۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کے ذہن میں سیاست میں ایجنسیوں کے کردار کا اچھا تاثر نہیں ہے جیسا کہ اصغر خان کیس میں یہ ثابت ہوا کہ ایجنسیوں نے آئی جے آئی بنا کر عوام کا مینڈیٹ چوری کیا اور شہید بینظیر بھٹو کو شکست سے دوچار کیا اور نواز شریف کو جتوایا۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے اصغر خان کیس میں حکومت کو ہدایت کی تھی کہ وہ ان افسران کے خلاف ایکشن لے جو دستور کے مقاصد کو فیل کرنے کا باعث بنے۔تنویر اشرف کائرہ نے کہا کہ پیپلز پارٹی ہمیشہ فوج کی سیاست میں مداخلت کی مخالف رہی ہے اس لیے وہ پاکستان تحریک انصاف کی تجویز کی حمایت نہیں کر سکتی۔

مزید :

صفحہ آخر -