خلوص نیت سے کام کر رہے ہیں، بجلی کا مسئلہ چند سالوں میں حل ہو جائے گا: وزیراعظم

خلوص نیت سے کام کر رہے ہیں، بجلی کا مسئلہ چند سالوں میں حل ہو جائے گا: وزیراعظم
خلوص نیت سے کام کر رہے ہیں، بجلی کا مسئلہ چند سالوں میں حل ہو جائے گا: وزیراعظم
کیپشن: Nawaz Sharif

  

برلن (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ ترقیاتی منصوبے 2018ءتک مکمل کر لئے جائیں گے جس کے باعث بجلی کا مسئلہ ہمیشہ کیلئے حل ہو جائے گا، پاکستان کو مشکلات سے نکالنے کیلئے خلوص نیت سے کام کر رہے ہیں۔ جرمنی میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ آپ سب کو دیکھ کر بہت خوشی ہو رہی ہے اور آپ کا جذبہ قابل قدر ہے، دلی خواہش ہے کہ پاکستان مشکلات سے باہر نکلے اور عوام نے جس محبت سے مینڈیٹ دیا ہے اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ ہمیں تمام امیدوں پر پورا اترنے کی توفیق عطاءفرمائے۔ وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ پاکستان جن مشکلات میں گھرا ہے وہ ایک دن میں حل نہیں ہو سکتیں، بجلی کے مسئلے کو حل ہونے میں چند سال لگیں گے یہ ایسا مسئلہ نہیں راتوں رات ختم ہو جائے، بجلی بحران پچھلے 23 سالوں کی غفلت کا نتیجہ ہے اور اسے ٹھیک ہونے میں بھی وقت درکار ہو گا تاہم ہمیں امید ہے کہ حکومت کی مدت پوری ہونے سے پہلے یہ مسئلہ ہمیشہ کیلئے ختم ہو جائے گا۔

وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ چائنہ کے صدر اور وزیراعظم کے ساتھ مل کر معاہدوں پر دستخط کئے ہیں جس کے تحت چائنا پاکستان میں لگ بھگ 40 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کر رہا ہے اور ان معاوں کی بدولت بجلی کے مسائل کو ہمیشہ کیلئے ختم کر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی کی حکومتوں نے پاکستان کے مسائل پر توجہ دی ہوتی تو آج یہ مشکلات پیدا نہ ہوتیں لیکن ہم نے پاکستان کے اندر ایک کو نکال کر دوسرے کو لا بٹھایا اور اندر میوزیکل چیئر چلتی رہی تاہم اب پاکستان اس کا متحمل نہیں ہو سکتا اور عوام نے سوچ سمجھ کر ووٹ دیا ہے، سب کو چاہئے کہ وہ پاکستان کی ترقی کی حمایت کریں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو ڈی ریل نہیں کرنا چاہئے کیونکہ یہ پاکستان تقدیر کے ساتھ کھیلنے کا وقت نہیں ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ حکومت میں آنے کے بعد ڈالر کی قیمت کو کنٹرول کیا اور 98 روپے تک لائے لیکن دھرنوں کا تماشا لگنے کے بعد ڈالر کی قیمت 104 روپے تک پہنچ گئی ہے تاہم حکومت اب بھی ڈالر کی قیمت کو نیچے لانے کی کوشش کر رہی ہے۔ اس موقع پر انہوں نے چند ہفتوں میں کراچی لاہور موٹروے پر کام شروع کرنے کا اعلان بھی کیا اور کہا کہ یہ اسی معیار کی ہو گی جو اس وقت پاکستان میں موجود ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -